جہاز کا پورا عملہ ہی پکڑا گیا، جرم ایسا کہ جان کر مسافر غصے سے لال پیلے ہوگئے

جہاز کا پورا عملہ ہی پکڑا گیا، جرم ایسا کہ جان کر مسافر غصے سے لال پیلے ہوگئے
جہاز کا پورا عملہ ہی پکڑا گیا، جرم ایسا کہ جان کر مسافر غصے سے لال پیلے ہوگئے

  



اوسلو(مانیٹرنگ ڈیسک)سبھی جانتے ہیں ہوائی جہاز کے پائلٹ کا دوران پرواز شراب کے نشے میں ہونا کس قدر خطرناک ہو سکتا ہے لیکن اس کے باوجود پائلٹس کے دوران پرواز شراب نوشی کے متعلق خبریں اکثر آتی رہتی ہیں۔ گزشتہ روز ناروے کے دارالحکومت اوسلو سے جانے والی بالٹک ایئرلائنز کی چارٹرفلائٹ کے نہ صرف پائلٹ بلکہ عملے کے تمام لوگ یعنی ایک سیکنڈ آفیسر اور دیگرارکان نے بھی شراب پی رکھی تھی جس کی وجہ سے پرواز کو منسوخ کر دیا گیا۔ ابتدائی طور پرمسافروں کو بتایا گیا کہ پائلٹ کی طبیعت ناساز ہے اس لیے پرواز منسوخ کی گئی۔ ایئرپورٹ عملے نے پائلٹ اور دیگر عملے کی حالت مشکوک دیکھ کر انتظامیہ کو اطلاع دی تھی جس پر انتظامیہ اور پولیس نے ان کا شراب نوشی کا ٹیسٹ کرایا گیا جس میں وہ سب فیل ہو گئے۔

پرواز منسوخ ہونے سے قبل مسافروں کا سامان طیارے میں لوڈ کیا جا چکا تھا جس کی وجہ سے انہیں 24گھنٹے کا طویل انتظار کرنا پڑا۔ ایک مسافر ہیلینا تھریسے کا کہنا تھا کہ یہ بہت حیران کن ہے، وہ عملہ جس کی ذمہ داریاں بہت بڑی اور نازک ہیں، وہ اپنے فرائض کو سنجیدگی سے نہیں لیتے ،ان میں ذرا بھی پروفیشنلزم نہیں ہے۔ ایئربالٹک کے ترجمان جینز وینگز کا کہنا ہے کہ شراب نوشی کے متعلق ہم اپنی پالیسی پر سختی سے عملدرآمد کرواتے ہیں اور عملے کی ذرا سی غفلت بھی برداشت نہیں کی جاتی۔ ہم اپنے مسافروں کے تحفظ پر کسی بھی صورت سمجھوتہ نہیں کر سکتے۔ پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ پرواز کے عملے کا یہ ایک ابتدائی ٹیسٹ کروایا گیا ہے۔ ابھی مزید کئی ٹیسٹ کروائے جائیں گے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے کلک کریں

آئی فون ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے کلک کریں

مزید : ڈیلی بائیٹس