ہسپتالوں میں لوکل پر چیز سمیت دیگر ٹھیکوں کی چھان بین شروع

ہسپتالوں میں لوکل پر چیز سمیت دیگر ٹھیکوں کی چھان بین شروع

  



لاہور(جاوید اقبال) محکمہ صحت نے صوبائی دارالحکومت کے سرکاری ہسپتالوں میں لوکل پرچیز سمیت دیگر ٹھیکہ جات کی چھان بین شروع کر دی ہے۔جس کیلئے سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک نے تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔سیکرٹری صحت کو شکایات موصول ہوئی تھیں کہ ٹیچنگ اور ڈسٹرکٹ ہسپتالوں میں لوکل پرچیز میں ادویات کے ساتھ ساتھ سرجیکل ڈسپوزایبل سازوسامان میں قواعد وضوابط کی دھجیاں اڑائی گئی ہیں۔اس کیلئے بعض ہسپتالوں کے میڈیکل سپریٹنڈنٹس نے من پسند کمپنیوں کو یومیہ بنیادوں پر ایل پی میں ادویات اور دیگر سازوسامان کی خریداری کیلئے 2014-15کیلئے بلک پرچیز کے ٹھیکہ جات منسوخ کر دیے۔جس کا مقصد ایل پی کے ٹھیکیداروں کو زیادہ سے زیادہ فائدہ پہنچانا تھا ۔اس طرح سیکرٹری صحت یہ بھی شکایات موصول ہوئیں کہ بعض ہسپتالوں کی انتظامیہ اپنی من پسند کمپنیوں کو فائدہ پہنچانے کیلئے ملٹی نیشنل کمپنیوں کو مسترد کرتے ہوئے گھٹیا کوالٹی کا سازوسامان فراہم کرنے والی کمپنیوں کو ٹھیکے دیے ،جس کے عوض ہسپتالوں کی انتظامیہ نے بھاری ’’نذرانے‘‘ وصول کیے جس کا ایکشن لیتے ہوئے سیکرٹری صحت نے تحقیقات کیلئے کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔کمیٹی نے ہسپتالوں کی طرف سے دیے گئے ٹھیکوں کے ریکارڈ کی چھان بین شروع کر دی ہے۔دوسری طرف ہسپتالوں کا آڈٹ بھی شروع کرا دیا گیا ہے۔آڈٹ ٹیموں کو مکمل چھان بین کا حکم دیا گیا ہے۔اس حوالے سے سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک کا کہنا ہے کہ کوئی قانون سے بالا تر نہیں ہے،تحقیقات شفاف اندازمیں ہوں گی اورجو بھی ذمہ دار قرار پا یا اس کے خلاف سخت کا روائی کریں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...