2013 کے انتخابات فکس ، (ن)لیگ کا اقتدار میں آنا طے تھا، میاں منظوروٹو

2013 کے انتخابات فکس ، (ن)لیگ کا اقتدار میں آنا طے تھا، میاں منظوروٹو

  



لاہور(جنرل رپورٹر) 2013 کے انتخابات فکس تھے اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کا اقتدار میں آنا طے تھا۔ یہ بات میاں منظور احمد وٹو صدر پیپلز پارٹی پنجاب نے کہی۔ انہوں نے کہا کہ اگر عمران خان بیلٹ بکس کھلوانے پر زور دیتے تو 2013 کے انتخابات میں دھاندلی بھی ثابت ہو جاتی اور آر اوز(RO's) کے انتخابات بھی ثابت ہو جاتے۔انہوں نے کہا کہ ان کے مد مقابل نے ان کو 2013 کے انتخابات میں ایک لاکھ آٹھ ہزار ووٹوں سے قومی اسمبلی کے انتخابات میں ہرایا تھا کیونکہ اسی حلقے سے صوبائی اسمبلی کے ضمنی انتخابات میں انکے بیٹے خرم جہانگیر خان وٹو نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے امیدوار کو صرف ایک مہینے بعد واضح اکثریت سے ہرایا تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی نے فکس انتخابات ہونے کے علم کے باوجود انتخابات میں حصہ اس لیے لیا کیونکہ پارٹی نے یہ فیصلہ کیا تھا کہ وہ کبھی بھی انتخابات کا دوبارہ بائیکاٹ نہیں کرے گی کیونکہ اس پالیسی سے آخر کار جمہوریت کو نقصان ہوتا ہے۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ پاکستان تحریک انصاف میں شامل نہیں ہو رہے اور پیپلز پارٹی کے ساتھ کھڑے ہیں اور بطور صدر پیپلز پارٹی پنجاب اپنے فرائضِ منصبی ادا کررہے ہیں اور ہائی کمان کوُ ان پر اعتماد ہے۔انہوں نے کہا کہ ان کو پاکستان مسلم لیگ (ن) کی پچھلی حکومت نے بدترین سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا اور انکے خلاف جھوٹے مقدمات نیب کے ذریعے شروع کئے گئے لیکن عدالت نے انہیں تمام مقدمات سے باعزت بری کیا اور کبھی پری بارگین نہیں کی۔

مزید : صفحہ آخر