چیف جسٹس قصور سیکنڈل کا از خود نوٹس لیں ،مقدمہ فوجی عدالت میں چلایا جائے ،سراج الحق

چیف جسٹس قصور سیکنڈل کا از خود نوٹس لیں ،مقدمہ فوجی عدالت میں چلایا جائے ...

  



 لاہور(آن لائن) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیاہے کہ قصور میں بچوں سے زیادتی کے واقعہ کا از خود نوٹس لیں اور جوڈیشل کمیشن بنا کر دو ہفتے کے اندر مجرموں کو گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جائے ۔ سانحہ کی تیز ترین تفتیش اور انکوائری کو یقینی بنایا جائے اور مجرموں کے خلاف ملٹری کورٹ میں دہشتگردی کی دفعات کے تحت مقدمہ چلایا جائے ۔ معصوم بچوں سے زیادتی سے بڑھ کر کوئی دہشتگردی نہیں ہوسکتی ۔ یہ وحشت اور بربریت کی انتہا ہے ۔ وزیراعلیٰ رائے ونڈ میں بیٹھ کر تسلیاں دینے کے بجائے متاثرین کے پاس پہنچیں اور ان کے زخموں پر مرہم رکھنے کی کوشش کریں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے تھانہ گنڈا سنگھ قصور کے موضع حسین خان والا میں بڑے عوامی اجتماع سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پنجاب نذیر احمد جنجوعہ ، ڈپٹی سیکرٹری رانا تحفہ دستگیر احمد ،ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف، مولانا جاوید قصوری اور لطیف سرا ء بھی موجود تھے ۔سراج الحق نے متاثرہ بچوں کے والدین سے بھی ملاقات کی اور انہیں یقین دلایا کہ جماعت اسلامی متاثرین کے ساتھ ہے اور ان کے ساتھ ناانصافی نہیں ہونے دے گی ۔ سراج الحق نے کہاکہ معصوم بچوں سے زیادتی اور پھر ان کے والدین سے بھتہ وصول کرنے سے بڑھ کر کوئی گھناؤنا کاروبار نہیں ہوسکتا ۔ یہ گھناؤنا کاروبار عرصہ سے جاری تھا مگر حکومت اور انتظامیہ سوئی رہی اور علاقہ کے بھیڑیے معصوم پھولوں کو مسلتے رہے ۔ انہوں کہاکہ جب علاقہ کے سینکڑوں متاثرین نے پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاج کیا تھا ، وزیراعلیٰ اور ممبران اسمبلی کا فرض تھاکہ وہ واقعہ کا نوٹس لیتے مگر اسمبلی میں بیٹھے ہوئے عوامی نمائندوں نے بھی اپنے فرض سے غفلت کا ثبوت دیا اور احتجاج کرنے والوں کو لاہور سے مایوس لوٹنا پڑا ۔سراج الحق نے مبین غزنوی اور لطیف سرا ء ایڈووکیٹ کی متاثرین کو انصاف دلانے کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہاکہ اگر پولیس یا کسی سیاسی اثر و رسوخ رکھنے والوں نے مبین غزنوی یا مقدمہ کی پیروی کرنے والوں کو نقصان پہنچانے یا ڈرانے دھمکانے کی کوشش کی تو جماعت اسلامی مظلوموں کے ساتھ کھڑی ہوگی اور کسی وڈیرے جاگیردار کو غریبوں پر ظلم نہیں ڈھانے دیا جائے گا۔

سراج الحق

کراچی (اسٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سر اج الحق نے کہا ہے کہ آج کراچی میں ہونے والی اس عظیم الشان ریلی کا اعلان ہے کہ جو کوئی بھی پاکستان سے ٹکرائے گا وہ پاش پاش ہوجائے گا ،پاکستان ایک خطہ زمین نہیں بلکہ نظریے اور ایک عقیدے کانام ہے جس کے لیے لازوال قربانیاں دی گئیں پاکستان سے غداری شہیدوں کے خون سے غداری ہے اور مہاجروں اور ہجرت سے غداری اور قائد اعظم محمد علی جناح سے غداری ہے اور ملک کے غداروں کو اس سر زمین پر کہیں پر بھی جائے پناہ نہیں ملے گی ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کراچی کے تحت ’’پاکستان زندہ باد ریلی ‘‘ سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر نائب امیر جماعت اسلامی صوبہ سندھ محمد حسین محنتی ،امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الر حمن اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔ریلی کے نظامت کے فرائض نائب امیر جماعت اسلامی کراچی اسامہ رضی انجام دے رہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ آج کی عظیم الشان ریلی پوری قوم کے لیے زندگی کا پیغام ہے آج ہمارا یہ اعلان ہے کہ جو ہم سے ٹکرائے گا وہ پاش پاش ہوجائے گا پاکستان کسی خطہ زمین کا نام نہیں بلکہ یہ ایک نظریہ اور عقیدہ کا نام ہے اس کے قیام کے لیے لا زوال قربانیاں دی گئیں لاکھوں لوگوں نے ہجرت کی ان کے جگر گوشوں کو زندہ جلایا گیا ،اور انہیں شہید کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ جو لوگ ملک میں ناٹواقوام متحد ہ اور بھارت کو دعوت دے رہے ہیں ان کے لیے ملک میں کوئی جگہ نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے آخر اس کا نوٹس کیوں نہیں لیا ۔ہم خون کے آخری قطرے تک اس کی حفاظت کریں گے پاکستان ہماری ماں ہے ،انہوں نے کہا کہ ہم کسی قوم کے خلاف نہیں ہیں ہماری لڑائی کرپٹ اشرافیہ کے ساتھ ہے ہم ظالموں کے ساتھ نہیں ۔پاکستان کو ایک بار پھر تحریک پاکستان کے جذبے کے تحت جدو جہد کرنی ہے ۔سراج الحق نے کہا کہ کراچی پورے پاکستان کی قیادت کرنے والا شہر ہے پاکستا ن کو اسلامی پاکستان بنانا ہمارا عزم ہے ۔بے روزگاری اور مہنگائی سے معاشرے کا استحصال نہ ہو جہاں اللہ کی حکمرانی ہو اسی میں پاکستان کے مسائل کا حل ہے ۔نوجوان جماعت اسلامی کی جدو جدہ میں شامل ہوں ۔اس ملک نے فوجی حکومتیں بھی دیکھی ہیں ایک اسلامی حکومت ہی عوام کے مسائل کا حل ہے ہم ملک میں اسلامی نظام نافذ کریں گے اور صحت اور تعلیم کی بنیادی سہولت کو عوام کے لیے مفت فراہم کریں گے ،ہم سودی نظام کا خاتمہ کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ جس طرح کل کا سورج طلوع ہونا ضروری اور یقینی ہے اسی طرح اسلامی نظام آنا بھی ضروری ہے ۔محمد حسین محنتی نے کہا کہ اگست کا مہینہ پاکستان کے قیام کا مہینہ ہے ،پاکستان اسلام کے لیے بنا تھا قائد اعظم نے فرمایا تھا کہ ملک کا دستور قرآن و سنت کی بنیاد پر بنے گا ،لیکن بد قسمتی سے ملک پر قابض رہنے والے حکمرانوں نے ملک اور قوم کو امریکہ کا غلام بنا دیا اس لیے جماعت اسلامی نے ملک کو آزاد کرانے کا عزم کیا ہے اور ہم عہد کرتے ہیں کہ ملک کے عوام کے ساتھ مل کر ملک کو امریکہ کے غلاموں سے نجات دلائیں گے اور سراج الحق کی قیادت میں ملک کی سلامتی اور جدو جہد جاری رہے گی ۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ صرف دو دن کے نوٹس پر عظیم الشان ریلی کا انعقاد کر کے ان لوگوں کو منہ توڑ جواب دیا ہے جو کراچی میں نیٹو اور اقوام متحدہ اور بھارت کو مداخلت کی دعوت دے رہے ہیں ،الطاف حسین صاحب سن لیں کراچی کے عوام ملک پر کوئی آنچ نہیں آنے دیں گے پاکستان انگریزوں اور ہندووں کی غلامی سے نجات حاصل کر نے کے لیے بنایا گیا تھا اس ملک کو امریکہ اور بھارت کی غلامی میں ہر گز نہیں جانے دیں گے ،الطاف حسین نے کراچی کے عوام کو پانچویں قومیت ،کوٹہ سسٹم کے خاتمے اور محصورین بنگلہ دیش کی واپسی کا نعرہ لگایا تھا اور مہاجروں کے نام پر اپنی سیاست کی لیکن کراچی کے عوام کو دھوکہ دیا گیا اور یہ نعرے اور مطالبے بھول کر خود لندن چلے گئے ۔انہوں نے کہا کہ اگر کسی نے مکتی باہنی بنا نے کی کوشش کی تو ہم بار پھر قربانیاں دینے کے لیے تیار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم اپنی پوزیشن واضح کریں ،اسپیکر قومی اسمبلی نے الطاف حسین سے لندن میں فون پر کیوں رابطہ کیا ۔انہوں نے کہا کہ کراچی کے حالات بہتر ہوتے ہیں اور ہم سیکورٹی اداروں کی کوششوں کا خیر مقدم کرتے ہیں مجرموں کے خلاف بلا امتیاز کاروائی کرنی چاہیے اور کسی کو بھی اس بات کا موقع نہیں دینا چاہیے کہ وہ لسانی بنیادوں پر عوام کو ایک بار پھر بے وقوف بنانے کی کوشش کرے ۔انہوں نے کہا کہ نعمت اللہ خان نے کراچی کے عوام کو بے مثال خدمت کی ،ماڈل پارک بنائے اور گرین بسیں چلائیں لیکن بعد میں ان سب کو ختم کر دیا گیا ۔پارکوں پر قبضے ہوگئے گرین بسوں کے بجائے چنگچی رکشے چلنے لگی اور چائنا کٹنگ کے نام پر سرمایہ کاری ،زمینوں اور قومی خزانوں کی لوٹ مار کا بازار گرم کیا گیا ۔

مزید : صفحہ آخر