طالبعلم کو قتل کرنے والا قیدی جیل میں پراسرار طور پر جاں بحق

طالبعلم کو قتل کرنے والا قیدی جیل میں پراسرار طور پر جاں بحق

  



لاہور(کر ائم سیل ) دوران ڈکیتی مزاحمت پر ایم بی اے کے طالعلم کو قتل کرنے والا قیدی کوٹ لکھپت جیل میں پراسرار طور پر جاں بحق ہو گیا پولیس نے قیدی کی لاش پورسٹمارٹم کے لیے مردہ خانے منتقل کر دی ۔ بتایا گیا ہے کہ 11جولائی 2007 کو گھریلو ملازم تنویر عباس نے اپنے خالو پرویز کے ساتھ مل کر والدین کے اکلوتے بیٹے اور ایم بی اے کے طالبعلم محمد احمد کو دوران ڈکیتی مزاحمت پر چھریوں کے وار کر کے قتل کرنے کے بعد لاش کو بیڈ کے نیچے چھپا کر گھر کا سامان لوٹ لیا تھا ، پولیس نے مقدمہ نمبر 795/7 درج کر کے ملزمان کو گرفتار کر لیا تھا اور دونوں ملزمان کاٹرائل چل رہا تھا پرویز کچھ عرصہ قبل جیل میں بیماری کے باعث دم تور گیا تھا گزشتہ روز تنویر کو طبیعت خراب ہونے پر سروسز ہسپتال لایا گیا جہاں وہ بھی جانبر نہ ہو سکا۔ پولیس نے اس کی لاش کو پورسٹمارٹم کے لیے مردہ خانے میں منتقل کر دیا۔

مزید : علاقائی