نیپال میں خوفناک زلزلے نے’’ماؤنٹ ایورسٹ‘‘کو چھوٹا کر دیا

نیپال میں خوفناک زلزلے نے’’ماؤنٹ ایورسٹ‘‘کو چھوٹا کر دیا
 نیپال میں خوفناک زلزلے نے’’ماؤنٹ ایورسٹ‘‘کو چھوٹا کر دیا

  



کٹھمنڈو (نیوز ڈیسک) نیپال میں 25اپریل کو آنے والا ہولناک زلزلہ نہ صرف ہزاروں انسانوں کی جان لے گیا بلکہ دنیا کا بلند ترین پہاڑ بھی اس کے قہر سے محفوظ نہ رہا۔یورپین سپیس ایجنسی کے سیٹلائٹ ڈیٹا سے انکشاف ہوا ہے کہ زلزلے کے بعد ماؤنٹ ایورسٹ کی بلندی میں ایک انچ کی کمی واقع ہوئی ہے۔ اگرچہ بظاہر یہ کمی معمولی نظر آتی ہے لیکن ماہرین ارضیات کا کہنا ہے کہ ہزاروں میٹر بلند اور کھربوں ٹن ٹھوس چٹان پر مشتمل پہاڑ کی بلندی میں ذرا سی تبدیلی بھی انتہائی بڑا واقعہ ہے۔ ماؤنٹ ایورسٹ کی بلندی میں تبدیلی کا اندازہ راڈار ٹیکنالوجی کی مدد سے بنائی گئی interferogram نامی تصاویر سے لگایا گیا ہے۔ ماہرین کے مطابق پہاڑ کی بلندی میں کمی کی وجہ قشرارض میں ہونے والی ٹوٹ پھوٹ ہے۔ تحقیق کاروں نے ماؤنٹ ایورسٹ کی بلندی میں کمی کے علاوہ بھی متعدد حیرت انگیز تبدیلیاں نوٹ کی ہیں۔ نیپال کا دارالحکومت سطح سمندر سے پہلے کی نسبت 3فٹ بلند ہوچکا ہے، کٹھمنڈو وادی کی بلندی میں 80سینٹی میٹر کا اضافہ ہوا ہے جبکہ انڈین ٹیکٹونک پلیٹ تبت کی ٹیکٹونک پلیٹ کی طرف حرکت کرچکی ہے۔ تحقیق کاروں کے مطابق عمودی تبدیلیوں کے علاوہ زمین کی پٹیوں میں سات فٹ کی افقی تبدیلیاں بھی آچکی ہیں۔ اس زلزلے میں اب تک آٹھ ہزار سے زائد افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں جبکہ یہ نیپال کی گزشتہ 80 سالہ تاریخ کا خوفناک ترین زلزلہ تھا۔

مزید : صفحہ آخر