ڈی جی رینجرز کی یقین دہانی پر ایم کیوایم کی ہڑتال کی کال واپس ، زبردستی دکانیں بند کرانے کی اجازت نہیں:ترجمان

ڈی جی رینجرز کی یقین دہانی پر ایم کیوایم کی ہڑتال کی کال واپس ، زبردستی ...
ڈی جی رینجرز کی یقین دہانی پر ایم کیوایم کی ہڑتال کی کال واپس ، زبردستی دکانیں بند کرانے کی اجازت نہیں:ترجمان

  



کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) رابطہ کمیٹی نے کراچی سمیت سندھ بھر کے تاجروں، دکانداروں اور ٹرانسپورٹرز سے اپیل کی ہے کہ وہ پیرکے روزاپنا کاروبار، دکانیں اور ٹرانسپورٹ بندرکھیں تاہم ڈی جی رینجرز کی جانب سے متحدہ کے کارکن کے قتل کی مذمت اور قاتلوں کو گرفتار کرنے کی یقین دہانی کے بعدیہ کال واپس لے لی گئی ، رینجرز کے ترجمان کی طرف سے جاری ہونے والے ایک اعلامیے میں خبراد کیا گیا تھا کہ کسی کو زبردستی دکانیں بند کرانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق ایم کیوایم کی رابط کمیٹی نے اتوار کو رات گئے ایک ہنگامی اجلاس میں ڈی جی رینجرز میجر جنرل بلال اکبر کی طرف سے متحدہ کے کارکن محمد ہاشم کی ہلاکت کی مذمت کو خوش آئندہ قرار دیا اور قاتلوں کو گرفتار کرنے کی یقین دہانی کے بعد ہڑتال کی کال واپس لینے کا فیصلہ کیا۔ایم کیو ایم کے مطابق محمدہاشم کے اہل خانہ نے عدالت سے رجوع کیا تھا اوران کی بازیابی کے لیے سندھ ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کی جس پر 28 جولائی کو عدالت کے حکم پر محمد ہاشم کی گمشدگی کی ایف آئی آر درج کی گئی۔ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کا کہنا ہے کہ تین ماہ بعد اتوار کو پولیس کے ذریعے محمد ہاشم کے اہل خانہ کو یہ اطلاع ملی کہ محمد ہاشم کی لاش جامشورو سے ملی ہے جس کو ایدھی فاو¿نڈیشن دفنا چکی ہے۔

دوسری جانب متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے رکن عبدالحسیب نے محمد ہاشم کے اہل خانہ کے ہمراہ ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ جرائم پیشہ عناصر کی بیخ کنی کی آڑ میں گذشتہ دو برسوں سے ایم کیوایم کے کارکنان اور عوام کے بنیادی انسانی حقوق بری طرح پامال کیے جا رہے ہیں، اس عرصے میں ان کے تین ہزار ذمہ داروں، کارکنوں اور ہمدردوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

رینجرز ترجمان نے اعلامیے میں شہریوں سے گذارش کی ہے کہ وہ اپنی معمول کی زندگی جاری رکھیں زبردستی ہڑتال کرانے والوں کی فوری اطلاع رینجرز ہیلپ لائن پر دیں، قتل کسی کا بھی ہو قابل مذمت ہے لیکن بلا تحقیق ہڑتال شہری زندگی پر اثر انداز ہونے کی مترادف ہے اور کسی کو شہر کے معمولات زندگی مفلوج کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

مزید : کراچی


loading...