سوسال میں پہلی مرتبہ نمل جھیل مکمل طورپر بھر گئی ، ڈیم ٹوٹنے کا خدشہ

سوسال میں پہلی مرتبہ نمل جھیل مکمل طورپر بھر گئی ، ڈیم ٹوٹنے کا خدشہ
سوسال میں پہلی مرتبہ نمل جھیل مکمل طورپر بھر گئی ، ڈیم ٹوٹنے کا خدشہ

  



میانوالی(مانیٹرنگ ڈیسک) نمل جھیل بھرجانے اور اوورفلوکے بعد زرعی مقاصد کیلئے 1913ءمیں تعمیرکیا جانیوالا نمل ڈیم ٹوٹنے کا خطرہ پیداہوگیا، اگر نمل ڈیم ٹوٹ گیاتو میانوالی ، موسیٰ خیل اور ابا خیل کے علاقے زیرآب آجائیں گے جبکہ موسیٰ خیل میں شدید تباہی کا خدشہ ہے ۔

تفصیلات کے مطابق ہرسال صفائی کے نام پر لاکھوں روپے جاری ہوتے ہیں لیکن محکمہ ایریگیشن صفائی کے نام پر جاری ہونیوالے لاکھوں روپے ہڑپ کرگیا جبکہ ڈیم کے تمام گیٹ خراب ہوچکے ہیں ، پانی کی مقدار زیادہ ہونے پر گیٹ کھولنے کی کوشش میں صرف دو گیٹ ہی کھولے جاسکے ہیں ۔ مقامی ذرائع نے بتایاکہ ناقص حکمت عملی سے کام لیتے ہوئے ڈیم کے گیٹوں کی جگہ لوہے کی چادریں اور خاردار تاریں لگادی گئیں ۔

علاقے میں شدید بارشوں اور ندی نالوں میں طغیانی کی وجہ سے تباہی مچاتے سیلابی ریلے نمل جھیل میں پہنچے اور پانی کا اخراج نہ ہونے پر ڈیم بھرتا چلاگیا، ڈیم سے دوردراز علاقوں تک پانی پھیل گیااور اپنی تعمیر کے بعد پہلی مرتبہ ڈیم مکمل طورپر بھر گیا ، پانی دیواروں سے باہر لڑھکنے لگا جس کے بعد آگے آنیوالے علاقوں میں فلڈ وارننگ جاری کردی گئی اور خدشہ ہے کہ مزید بارشوں سے ڈیم کی دیواریں گرسکتی ہیں ۔

نمل شہر اور گردونواح کے لوگوں نے انتظامیہ سے حفاظتی دیوار کی تعمیر کا مطالبہ بھی کیاہے ۔

مزید : میانوالی