مسجد میں ہونے والا خودکش حملہ دہشت گردی کے خلاف عزم کو کمزور نہیں کر سکتا: سعودی عرب

مسجد میں ہونے والا خودکش حملہ دہشت گردی کے خلاف عزم کو کمزور نہیں کر سکتا: ...
مسجد میں ہونے والا خودکش حملہ دہشت گردی کے خلاف عزم کو کمزور نہیں کر سکتا: سعودی عرب

  



جدہ (محمد اکرم اسد / بیورو چیف) سعودی نائب خادم حرمین شریفین، ولی العہد اور وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نائف بن عبدالعزیز نے کہا ہے کہ عسیر کی ایمرجنسی سروسز کی مسجد میں ہونے والا خود کش حملہ دہشت گردی کے خلاف ہمارے عزم کو کمزورنہیں کرسکتا بلکہ دہشت گردی کے ان خونی واقعات سے دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے غیر متزلزل عزم میں مزید شدت آئے گی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں ایک اعلیٰ سطحی سیکیورٹی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ملک میں امن و امان کے قیام میں سرگرم مختلف اداروں کے سربراہوں نے شرکت کی۔ ولی عہد نے خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے جمعرات کے روز عسیر میں ایمرجنسی سروسز کی مسجد میں ہونے والے خود کش دھماکے میں شہید ہونے والے افراد کے لواحقین سے تعزیتی پیغام پڑھ کر سنایا۔ شاہ سلمان نے اپنے بیان میں عسیر مسجد میں خود کش حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ پوری قوت کے ساتھ جاری رہے گی۔

خیال رہے کہ عسیر کی مسجد میں ہونے والے مبینہ خود کش حملے سے 15 سیکیورٹی اہلکار شہید اور 33 زخمی ہوگئے تھے۔ شاہ سلمان نے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ شہدا کے ساتھ اپنا خصوصی فضل و کرم کرے، ان کی مغفرت فرمائے اور انہیں جنت نصیب کرے اور زخمیوں کو شفائے کامل و عامل عطا فرمائے۔ ولی عہد کی صدارت میں اجلاس میں ملکی امن و امان کے حوالے سے اہم فیصلے کئے گئے۔ ولی عہدنے تمام سیکیورٹی اداروں کو ملک میں امن وامان کے قیام کے حوالے سے اہم فیصلے کئے گئے۔ ولی عہد نے تمام سیکیورٹی اداروں کو ملک میں امن کو یقینی بنانے کے لئے فول پروف انتظامات کی ہدایت کی اور کہاکہ خطے میں تیزی کے ساتھ بدلتے ہوئے حالات کے تناظر میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کا کردار زیادہ اہمیت اختیار کرگیا ہے۔

لہٰذا کسی بھی نئی صورتحال سے نمٹنے کے لئے احتیاطی تدابیر کا معیار پڑھادیا جائے اور انتظامات دگنے کردئیے جائیں۔ اجلاس میں حج کی تیاریوں کے سلسلے میں کئے گئے سیکیورٹی انتظامات کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی۔ اس موقع پر مکہ مکرمہ، مدینہ منورہ اور مشاعر مقدسہ کے لئے حج موسم کے دوران تیار کی گئی سکیموں کا بھی جائزہ لیا گیا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...