کشمیر بھارت کے ہاتھ سے نکلنے لگا، ہر بات کا الزام پاکستان پر لگانے والی بھارتی فوج بھی اعتراف کرنے پر مجبور ہوگئی

کشمیر بھارت کے ہاتھ سے نکلنے لگا، ہر بات کا الزام پاکستان پر لگانے والی ...
کشمیر بھارت کے ہاتھ سے نکلنے لگا، ہر بات کا الزام پاکستان پر لگانے والی بھارتی فوج بھی اعتراف کرنے پر مجبور ہوگئی

  



نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت نے کشمیریوں کو دبانے کیلئے اور پاکستان سے دور کرنے کیلئے ہر طرح کے ظلم ڈھا کر دیکھ لئے لیکن نتیجہ کیا نکلا، یہ کوئی بھارتی پولیس اور فوج سے پوچھے جس نے اپنی حکومت کو مقبوضہ کشمیر کے اصل حالات اور اپنی بڑھتی ہوئی پریشانی سے خبردار کردیا ہے۔

اخبار ’’ٹائمز آف انڈیا‘‘ کے مطابق بھارتی انٹیلی جنس ذرائع نے اعتراف کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں حریت پسندوں کی تحریک زوروں پر ہے اور یہ اعتراف بھی کیا ہے کہ یہ تحریک چلانے والے کہیں اور سے نہیں آئے بلکہ بھارتی ظلم کے خلاف کھڑے ہونے والے کشمیری دھرتی کے بیٹے ہیں۔

اخبار کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے آئی جی پولیس مجتبیٰ گیلانی کا کہنا ہے کہ مقامی نوجوانوں میں علیحدگی پسندوں کے ساتھ ملکر مسلح جدوجہد کا رجحان بڑھ رہا ہے اور خصوصاً گزشتہ سال سے اس میں تیزی آگئی ہے۔ بھارتی پولیس کیلئے یہ بات خصوصی طور پر درد سر بن گئی ہے کہ اس کے کشمیری اہلکار اچانک غائب ہوجاتے ہیں اور پھر پتا چلتا ہے کہ وہ بھارت کے خلاف ہتھیار اٹھاچکے ہیں۔ ایک ایسی ہی مثال نصیر احمد پنڈت کی صورت میں سامنے آئی جو دو کلاشنکوف بندوقوں کے ساتھ لاپتہ ہوگیا اور پھر سوشل میڈیا پر آنے والی حریت پسندوں کی ویڈیو میں نظر آیا۔ اسی ویڈیو میں برہان مظفر نامی نوجوان بھی نظر آیا جس کے متعلق بھارتی پولیس کا خیال ہے کہ وہ اپنی علیحدہ تنظیم قائم کرچکا ہے۔

اخبار کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں 15 کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ سراتاساما کا کہنا ہے کہ ہم واقعی پریشان ہیں اور اس رجحان پر قابو پانے کیلئے کوشش کررہے ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اپنی فوج اور پولیس کی بیان کردہ حقیقت کو نظر انداز کرکے بھارتی سرکار اور میڈیا ابھی بھی یہ تاثر دینے میں لگے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر میں سب ٹھیک ہے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے کلک کریں

آئی فون ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے کلک کریں

مزید : بین الاقوامی