داعش کی قید سے رہائی پانے کے بعد خاتون نے اپنا برقعہ اتارنے کی کوشش کی تو اس کے چھوٹے سے بچے نے واپس اس کا چہرہ ڈھانپ دیا اور ساتھ ہی ایک بات ایسی کہہ دی کہ جان کر آپ کی آنکھیں بھی نم ہوجائیں گی

داعش کی قید سے رہائی پانے کے بعد خاتون نے اپنا برقعہ اتارنے کی کوشش کی تو اس ...
داعش کی قید سے رہائی پانے کے بعد خاتون نے اپنا برقعہ اتارنے کی کوشش کی تو اس کے چھوٹے سے بچے نے واپس اس کا چہرہ ڈھانپ دیا اور ساتھ ہی ایک بات ایسی کہہ دی کہ جان کر آپ کی آنکھیں بھی نم ہوجائیں گی

  

دمشق (مانیٹرنگ ڈیسک) شدت پسند تنظیم داعش کا خوف شام کے بچوں کے دلوں میں کس طرح بیٹھ گیا ہے اس کا اندازہ حال ہی میں سامنے آنے والی اس ویڈیو سے کیا جا سکتا ہے جس میں ایک ننھا بچہ داعش کی قید سے آزاد ہونے والی اپنی ماں کو چہرے سے نقاب ہٹانے کی اجازت نہیں دے رہا کیونکہ اسے خوف ہے کہ داعش کے جنگجو ایسا کرنے پر اس کی ماں کو پکڑ کر لے جائیں گے۔

اسلام آباد میں خاتون بنا قمیض کے سڑک پر آگئی،ریپ کا الزام ،ویڈیوآگئی، حقیقت ایسی نکلی کہ آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ ویڈیو اس وقت ریکارڈ کی گئی جب منبج شہر سے آزاد کروائی گئی خواتین اور بچوں کو ایک ٹرک سے اتارا جارہا تھا۔ رپورٹ کے مطابق کرد جنگجوﺅں نے منبج شہر میں داعش کے آخری گروپ کو بھی ٹھکانے لگادیا ہے جس کے بعد شدت پسند تنظیم کی قید میں موجود درجنوں خواتین اور بچوں کو پہلی بار آزاد فضا میں سانس لینے کا موقعہ ملا۔ انہی خواتین میں یہ برقعہ پوش خاتون بھی شامل تھی کہ جو کئی ماہ بعد آزادی ملنے پر جذباتی ہوگئی اور اپنے آنسو پونچھنے کے لئے اپنے چہرے سے نقاب ہٹایا ہی تھا کہ اس کا ننھا بچہ دوبارہ کپڑے کو پکڑ کر اس کے منہ پر کھینچنے لگا۔ بچہ اپنی ماں سے بار بار کہہ رہا تھا کہ وہ اپنا منہ چھپالے ورنہ اسے پکڑلیا جائے گا۔ خاتون اپنے بچے کو خوفزدہ دیکھ کر بے اختیار آنسو بہاتی رہی اور اسے یقین دلانے کی کوشش کرتی رہی کہ اب وہ آزاد ہے۔ داعش کے خلاف لڑنے والے کرد جنگجوﺅں کا کہنا ہے کہ مبنج شہر کے بیشتر علاقوں کو داعش سے پاک کردیا گیا ہے، تاہم تاحال شہر کے کچھ حصوں میں داعش کے لوگ باقی ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -