اورنج ٹرین ، 20سٹیشنوں کی عمارتیں مکمل مکینکل کام شروع

اورنج ٹرین ، 20سٹیشنوں کی عمارتیں مکمل مکینکل کام شروع

 لاہور(جنرل رپورٹر) سٹیرنگ کمیٹی کے چیئرمین خواجہ احمد حسان نے بتایا ہے کہ میٹرو ٹرین کے 20بالائے زمین سٹیشنوں کی عمارتیں تعمیر کر کے وہاں الیکٹریکل و مکینیکل کام شروع کر دیا ہے ۔ جین مندر کے علاقے میں زیر زمین انار کلی سٹیشن کا 70فیصدتعمیراتی کام مکمل جبکہ اسلام پارک سے پاکستان منٹ تک پانچ کلومیٹر طویل پٹری بچھالی گئی ہے ۔اورنج لائن کے لئے چین میں تیار کر دہ ایک ٹرین بحری جہاز کے ذریعے پاکستان روانہ کرنے کے لئے شنگھائی بندرگاہ (پورٹ) پر پہنچادی گئی ہے ۔علی ٹاؤن رائے ونڈ روڈ پر 192کنال اراضی پر سٹیبلنگ یارڈ کی تعمیر کا 74فیصد کام مکمل کر لیا گیا ہے جہاں سگنلز کا نظام چلانے کے لئے دفاتر تعمیربھی کئے گئے ہیں۔ڈیرہ گجراں سے چوبرجی تک پیکیج ون میں دستیاب جگہوں پر منصوبے کاتعمیراتی کام تقریباً مکمل ہے جبکہ جی پی او کے قریب زیر زمین سنٹرل سٹیشن اور چنددیگر مقامات پر کام حکم امتناعی ختم ہونے کے بعد کیا جائے گا ۔ وہ گزشتہ روز اورنج لائن منصوبے پر پیش رفت کا جائزہ لینے کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔اجلاس کو بتایا گیاکہ علی ٹاؤن سے چوبرجی تک اورنج لائن میٹرو ٹرین پیکیج ٹو کا تعمیراتی کام تسلی بخش طور پر جاری ہے ‘اس حصے میں ٹرین کے بالائے زمین ٹریک کی تعمیر کے لئے30میٹر لمبے‘5.5میٹر چوڑے اور 216ٹن وزنی806یو ٹب گرڈرز مقامی طور پر تیار کئے جا رہے ہیں‘ ابھی تک 168 یو ٹب گرڈرز تیار جبکہ 65نصب کئے جا چکے ہیں جن پر ٹرین کی پٹری بچھائی جائے گی ۔ ان کی تنصیب سے 40فٹ بلندی پر تعمیر کئے جانے والے میٹر و ٹرین کے راستے کی شکل واضح ہونا شروع ہوجائے گی ۔ سٹیم کیورنگ ٹیکنالوجی کی مدد سے 14اگست سے روزانہ 9یوٹب گرڈر تیار کئے جائیں گے اور 15ستمبر تک انہیں نصب کر کے ٹرین کے لئے چار کلو میٹر طویل بالا ئے زمین راستہ تعمیر کر لیا جائے گا۔خواجہ احمد حسان نے کہا کہ میٹر ٹرین پراجیکٹ پرفاسٹ ٹریک پر کام کیا جا رہا ہے اور اس مقصد کے لئے مختصر ٹائم لائنز مقر ر کر کے منصوبے کو ایک چیلنج کے طور پر مکمل کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے چینی کنٹریکٹر سی آر نورنکو کوہدایت کی کہ الیکٹریکل و مکینکل ورکس تیزی سے مکمل کرنے کے لئے افرادی قوت کی تعداد میں اضافہ کیا جائے ۔ ہر سٹیشن پر ایک علیحدہ اور مکمل پراجیکٹ کے طور پر کام کیا جائے اور تمام سٹیشنوں پر کام مکمل کرنے کی حتمی تاریخوں کا تعین کیا جائے ۔ انہوں نے ہدایت کی کہ سٹیشنوں پر بنائے جانے والے ایکوپمنٹ رومز ترجیحی بنیادوں پر مکمل کئے جائیں ۔ ڈیرہ گجراں میں ڈپو کی تعمیر 31اگست جبکہ علی ٹاؤن رائے ونڈ روڈ پر سٹیبلنگ یارڈ کی تعمیر15ستمبر تک مکمل کی جائے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ مجموعی طور پر منصوبے کا 72.5فیصد تعمیراتی کام مکمل ہو چکا ہے ۔ڈیرہ گجراں سے چوبرجی تک پیکیج ون کا85.3فیصد‘ چوبرجی سے علی ٹاؤن تک پیکیج ٹو کا 52.7فیصد ‘پیکیج تھری ڈپو کا 78فیصد جبکہ پیکیج فور سٹیبلینگ یارڈ کی تعمیر کا74 فیصد کام مکمل کیا جا چکا ہے ۔خواجہ احمد حسان نے ہدایت کی کہ میٹرو ٹرین منصوبے کے تعمیراتی کام والے علاقوں میں ٹریفک کی بلارکاوٹ آمد و رفت کے لئے ضرورت کے مطابق ٹریفک وارڈنز کی تعیناتی یقینی بنائی جائے ۔تیار شدہ یوٹب گرڈرز کو کاسٹنگ یارڈ سے سائٹ تک پہنچانے کے لئے ٹریفک وارڈنز ان کی رہنمائی کریں۔ اورنج لائن پیکیج ٹو کے ٹریفک معاملات کی دیکھ بھال کے لئے ڈی ایس پی سطح کا سیکشن انچارج مقرر کیا جائے جو مختلف مقامات پر ٹریفک وارڈنز کی تعیناتی کا جامع پلان بنا کر اس پر عمل در آمد کروانے کا ذمہ دار ہو ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1