جولائی میں صہیونی فوج کے کریک ڈاؤن میں 880فلسطینی گرفتار

جولائی میں صہیونی فوج کے کریک ڈاؤن میں 880فلسطینی گرفتار

رام اللہ (اے این این)فلسطین میں انسانی حقوق کیلئے سرگرم تنظیموں کی طرف سے جاری کردہ رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ جولائی 2017 کو اسرائیلی فوج نے مقبوضہ مغربی کنارے،بیت المقدس اور غزہ سمیت دیگر فلسطینی علاقوں میں بڑے پیمانے پر فلسطینیوں کی گرفتاریاں کیں جن میں 880فلسطینیوں کو پابندسلاسل کردیا گیا۔فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق انسانی حقوق کی تنظیموں کی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ جولائی میں اسرائیلی فوج کے روز مرہ کی بنیاد پر جاری رہنے والے سرچ آپریشن میں 18 خواتین اور 144 بچوں سمیت 880 فلسطینیوں کو پابند سلاسل کیا گیا۔رپورٹ کے مطابق جولائی میں سب سے زیادہ گرفتاریاں مقبوضہ بیت المقدس سے کی گئیں جہاں سے مجموعی طور پر 425 فلسطینی حراست میں لیے گئے۔ اس کے بعد غرب اردن کے جنوبی شہر الخلیل سے 120، نابلس سے 85، جنین سے 49، قلقیلیہ سے 47، بیت لحم سے 45، رام اللہ اور البیرہ گورنری سے 37، طولکرم سے 36، طوباس سے 14، سلفیت سے 10، اریحا سے بھی 10 اور غزہ سے دو فلسطینیوں کو حراست میں لیا گیا۔انسانی حقوق کے گروپوں کے مطابق اس وقت اسرائیلی زندانوں میں پابند سلاسل فلسطینیوں کی تعداد 6400 ہے۔ ان میں 10 کم عمر لڑکیوں سمیت 62 خواتین، 300 بچے، 450 انتظامی حراست کے قیدی اور 12 فلسطینی ارکان پارلیمنٹ بھی شامل ہیں۔

گذشتہ ماہ اسرائیلی عدالتوں کی جانب سے 97 فلسطینیوں کو انتظامی حراست کی سزائیں دی گئیں۔ ان میں 77 پہلے سے سزا یافتہ شہری شامل ہیں جب کہ 20 نئے انتظامی قیدی شامل ہیں۔

مزید : عالمی منظر