عراق میں الحشد ملیشیا کے مراکزپر بمباری،امریکا کا اظہارلاتعلقی

عراق میں الحشد ملیشیا کے مراکزپر بمباری،امریکا کا اظہارلاتعلقی

بغداد(این این آئی)شام اور عراق کی سرحد پر واقعے ایک قصبے میں عراقی شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی کے مراکز پر بمباری کی متضاد اطلاعات سامنے آئی ہیں۔ میڈیارپورٹس کے طابق عالمی اتحادی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اتحادی فوج نے الحشد ملیشیا کے مراکز کو بمباری سے نشانہ نہیں بنایا۔ دوسری جانب داعش نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔مختلف ذرائع سے ملنے والی اطلاعات میں سے بعض میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ امریکا کی قیادت میں داعش کے خلاف سرگرم اتحادی فوج نے شام اور عراق کی سرحد پر الحشد ملیشیا کے مراکز پر فضائی حملے کئے ہیں جن کے نتیجے میں کم سے کم 36 شیعہ جنگجو ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے ۔دوسری جانب شدت پسند گروپ ’داعش‘ نے شام کی سرحد کے قریب الحشد ملییشا کے ٹھکانوں پر حملے کا دعویٰ کیاہے۔ داعش کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ عکاشات کے مقام پر داعش نے تو پخانے سے الحشد ملیشیا کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ اس حملے میں امریکا ملوث نہیں۔ داعش نے اس حملے کی ایک مبینہ ویڈیو بھی جاری کی ہے جس میں متعدد شیعہ جنگجوؤں کو گرفتار کرتے بھی دکھایا گیا ہے۔

مزید : عالمی منظر