تیمر گرہ میں آپریشن ،میجر سمیت پاک فوج کے 4اہلکار شہید،ایک دہشتگرد ہلاک ،دوسرا گرفتار

تیمر گرہ میں آپریشن ،میجر سمیت پاک فوج کے 4اہلکار شہید،ایک دہشتگرد ہلاک ...

تیمرگرہ ،راولپنڈی،لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں، اپنے کرائم رپورٹر سے) وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے (فاٹا) میں دہشت گردوں کیخلاف آپریشن کے دوران خود کش دھماکے کے نتیجے میں پاک فوج کے ایک میجر سمیت 4 اہلکار شہید ہوگئے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق لوئر دیر تیمر گرہ کے علاقے شیروٹ کئی میں فورسز نے خفیہ اطلاع پر آپریشن کا آغاز کیا،اس دوران 3 میں سے ایک دہشت گرد نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا، جس کے نتیجے میں ایک میجر ، دو حولداراورایک سپاہی شہید جبکہ جھڑپ کے دوران ایک دہشت گرد کو ہلاک اور ایک کو گرفتار کرلیا گیا۔شہداء میں آپریشن کی سربراہی کرنیوالے میجر علی سلمان کا تعلق خفیہ ادارے سے تھا، دیگرشہید اہلکاروں میں حوالدار غلام نذیر، حوالدار اختر اور سپاہی عبدالکریم شامل ہیں۔شہداء کے جسد خاکی پہلے پشاور لائے گئے جہاں کور ہیڈ کواٹر میں شہیدوں کی نماز جنازہ ادا کی گئی جس میں کور کمانڈر پشاور، چیف سیکرٹری، آئی جی پی خیبر پختونخواہ سمیت اعلیٰ سول اور عسکری حکام نے شرکت کی۔ بعد ازاں شہیدون کے جسد خاکی آبائی علاقوں کو روانہ کئے گئے ، شہید میجر علی سلمان کا جس خاکی لاہور لایا گیا جہاں نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد انہیں پورے فوجی اعزاز کیساتھ مقامی قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا ۔انکی نماز جنازہ ایوب اسٹیڈیم میں ادا کی گئی جس میں ڈائریکٹر جنرل رینجرز پنجاب میجر جنرل نوید حیات ، جی او سی 10ڈویژن میجر جنرل عامر ، جی او سی 11ڈویژن میجر جنرل عدنان سمیت دیگر فوجی افسران ، شہید کے عزیز و اقارب سمیت دیگر مختلف شعبہ زندگی سے وابستہ اہم شخصیات نے شرکت کی ۔ اس موقع پر شہید کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کیساتھ اہل خانہ کیلئے خصوصی دعا بھی کی گئی ۔یاد رہے شہید میجر علی سلمان لاہور کے علاقہ ڈیفنس کے رہائشی ، والدین کے اکلوتے فرزند اور دو بیٹوں کے باپ تھے ۔ ادھر صدر مملکت ممنون حسین ، وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے تیمرگرہ میں دہشت گردانہ حملے میں پاک فوج کے نوجوانوں کی شہادت پر گہرے دکھ درد ،غم و رنج اور شہداء کے ورثاء سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے دہشت گردی کی کمر توڑنے کے عزم کا اعادہ کیا اور کہا افواج پاکستان نے دہشت گردی کیخلاف اور امن وامان کے قیام کیلئے لازوال قربانیاں دی ہیں ، دہشت گردوں کے بزدلانہ حملے ہمارے حوصلے پست نہیں کرسکتے بلکہ جوانوں کے خون کا ایک ایک قطرہ دہشت گردی کیخلاف ہمارے ارادے کا مظہر ہے اور بہت جلد اس ناسور سے چھٹکارا حاصل کرلیا جائے گا، ملک بھر کی سیاسی ، مذہبی و سماجی قیادت نے تیمرگرہ دہشتگرد حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم ملک میں امن و استحکام اور اسے دہشتگردی سے پاک کرنے کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنیوالوں پر فخر کرتی ہے ۔

تیمرگرہ آپریشن

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے سربراہ میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے آپریشن خیبر فور بہت اونچائی پر کیا گیا اس کی کامیابیوں اور دیگر تفصیلات کے حوالے سے آئندہ چند روز میں مفصل پریس کانفرنس کروں گا۔دہشتگر د ی ریاستی اداروں کو ختم کرنے کیلئے ہوتی ہے اورجب ایک شہری سڑک پرچلتے ہوئے خود کومحفوظ سمجھے گا تو قانون کی بالادستی ہوگی ۔ آ پر یشن رد الفساد میں تما م ریاستی اداروں نے مل کر دہشت گردوں کیخلاف کارروائیاں کی ہیں جبکہ پاک فوج تمام اداروں کی جنگ لڑ رہی ہے۔گزشتہ روز نجی ٹی وی چینل سے گفتگو میں انکا مزید کہنا تھا آج کی کارروائی میں پاک فوج کا بہت کم جانی نقصان ہوا ہے، جذباتی اندازمیں دیکھا جا ئے توجب آپ کانقصان ہوتاہے تو تکلیف تو ہوتی ہے لیکن ہمارے شہدا ہمارا فخر ہیں جو مادر وطن کی بقاء کی جنگ لڑ رہے ہیں ۔ دہشتگر د و ں کی نشاندہی کیلئے انٹیلی جنس ادارے فعال ہیں، دہشتگرد جب عوام کے درمیان رہتاہے تو اسکی پہچان مشکل ہوجاتی ہے۔ ٹی ٹی پی کے د ہشتگر دوں نے اپر دیرمیں پناہ لی ہوئی تھی اور وہ یوم آزادی کے موقع پر دہشت گردی کرنا چاہ رہے تھے ، سکیورٹی اداروں نے بھرپور کارروائی کرکے ملک کو ایک بڑی تباہی سے بچا لیا ہے۔انکا مزید کہنا تھا آپریشن رد الفساد دیگر آپریشن سے مختلف ہے۔رد الفساد کا بنیادی فیچر آئی بی او ز ہیں اور آپریشن ردالفسادکی کامیابی تمام اداروں کے تعاون سے ممکن ہے۔ہم نے بحیثیت قوم دہشت گردی کیخلاف لڑنا ہے،رد الفساد میں تمام ادارے مل کر دہشتگردوں سے لڑ رہے اور وہ وقت دورنہیں جب ہرشہری محفوظ ہوگا۔

مزید : صفحہ اول