جشن آزادی کی تقریبات کا باضابطہ آغاز، آزادی ٹرین کیلئے جامع سکیورٹی پلان تیار

جشن آزادی کی تقریبات کا باضابطہ آغاز، آزادی ٹرین کیلئے جامع سکیورٹی پلان ...

ملتان(وقائع نگار، جنرل رپورٹر)ڈ سٹر کٹ ہیلتھ اتھارٹی ملتا ن کے زیر اہتما م جشن آ زا دی تقر یبا ت کا با ضا بطہ آغا ز کر دیا گیا ہے ۔(بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

اس سلسلے میں تما م ہسپتا لو ں ، مر اکز صحت اور دفا تر میں خصوصی آ ز اد ی تقر یبا ت کا انعقا د کیا جا ئے گا ۔گز شتہ رو ز ڈسٹر کٹ ہیلتھ ڈو یلپمنٹ سنٹر میں ایک سیمینا ر کا انعقا د کیا گیا ۔جس کی صدا ر ت چیف ایگز یکٹیو آ فیسر ہیلتھ اتھا ر ٹی ڈا کٹر عا شق ملک نے کی جبکہ مہما ن خصوصی میں ڈ ی ایچ او ( ایچ آ ر ایم ) ڈا کٹر علی مہد ی اورفو کل پر سن ڈا کٹرعطا ء الر حمن بھی شا مل تھے ۔سیمینا ر سے خطاب کر تے ہو ئے ڈا کٹر عا شق ملک نے کہا کہ وطن عز یز ہما ر ے بز ر گو ں نے بے پنا ہ قر با نیا ں دے کر حا صل کیا ہے ۔نوجوا ن نسل کو ان قر با نیو ں کا احسا س کر تے ہو ئے ملک کی تعمیر و تر قی میں اپنا کر دا ر ادا کر نا ہو گا ۔ڈا کٹر عطا ء الر حمن اور ڈا کٹر علی مہد ی نے خطا ب کر تے ہوئے کہا کہ 14 اگست ہما ر ے ملی جذ بے کو ابھا ر تا ہے اور یہ احسا س دلا تا ہے کہ آزا د ی کی کیا اہمیت ہے ۔اس موقع پر ڈ ینگی فو ر س کے اہلکاروں نے ملی نغمے بھی پیش کئے ۔محکمہ ریلوے کی جانب سے یوم آزادی کے موقع پر چلائی جانے والی سپیشل آزادی ٹرین کا دورانیہ ایک ماہ سے کم کرکے صرف13روز کردیا گیا ۔ پچھلے سال 12اگست کو مارگلہ سے سفر کا آغاز کرنے والی آزادی ٹرین نے 10ستمبر کو کراچی پہنچ کر اپنے سفر کا اختتام کیا تھا مگر اب یہ آزادی ٹرین 12اگست کو چل کر25گست کو سفرکا اختتام کردے گی۔ آزادی ٹرین بدھ کی دوپہر 12بجکر30منٹ پر روانہ ہو کر سب سے پہلے شام 4بجکر30منٹ پرپشاور کینٹ پہنچے گی۔ 13اگست کو پشاور سے صبح 10بجکر30منٹ پر راولپنڈی کے لیے روانہ ہو کر13اگست کوشام 7بجکر15منٹ پرراولپنڈی پہنچے گی۔ 15اگست کو صبح 9بجکر15منٹ پر راولپنڈی سے روانہ ہوکررات 10بجے لاہورپہنچے گی۔دودن لاہور میں رکنے کے بعد17اگست کولاہور سے صبح9بجے ملتان کے لئے روانہ ہو کررات 11بجکر30منٹ پرملتان پہنچے گی۔ 18اگست کو ملتان سے صبح9بجے خان پور کے لئے روانہ ہو کررات7بجکر19منٹ پرخان پورپہنچے گی۔ ایک دن وہاں رکنے کے بعد 19اگست کو خان پور سے صبح 8بجکر30منٹ پرروانہ ہوکررات8بجے سکھرپہنچے گی۔20اگست کو سکھر سے صبح 9بجکر30منٹ پرروانہ ہوکرشام 7بجے سبی پہنچے گی۔ایک دن وہاں رکنے کے بعد سبی سے21اگست کو صبح 7بجے روانہ ہوکرشام 5بجے کوئٹہ پہنچے گی۔23اگست کو کوئٹہ سے صبح 7بجے روانہ ہوکرشام 7بجکر30منٹ پر سکھر پہنچے گی۔ ایک دن وہاں قیام کرنے کے بعد24اگست کو سکھر سے صبح 8بجے روانہ ہوکرشام 7بجے نواب شاہ پہنچے گی اوروہاں سے براستہ ٹنڈو آدم حیدر آباد پہنچے گی۔ حیدرآباد ایک رات رکنے کے بعدبراستہ کوٹری کراچی کینٹ کے لئے روانہ ہو گی اور 25اگست کو شام 06بجے کراچی پہنچ کر اپنا سفر مکمل کرے گی۔واضح رہے آزادی ٹرین کے ملتان میں قیام کے دوران رنگا رنگ میوزیکل پروگرام اور ثقافتی رقص پیش کئے جائیں گے جبکہ پاکستان نیشنل کونسل آف دی آرٹس کے20سے زائد فنکار پتلی تماشا بھی پیش کریں گے۔ دریں اثناء پاکستان ریلویز نے آزادی ٹرین کے لئے سکیورٹی کا جامع پلان تیار کرلیا ہے اور فیصلہ کیا ہے کہ فول پروف سکیورٹی کو یقینی بنانے کے لئے ذمہ دار اداروں رینجرز‘ ایف سی اور چاروں صوبوں کی پولیس کے ساتھ رابطہ کیا جائے گا آزادی ٹرین کے ساتھ کمانڈوز بھی تعینات کئے جائیں گے ایس پی لیول کے افسران ٹرین کے ساتھ سفر کریں گے۔ پاکستان ریلویز کی جانب سے چلائی جانے والی آزادی ٹرین کے حوالے سے سکیورٹی کے امور کے متعلق ایک اہم اجلاس ریلوے سنٹرل پولیس ہیڈ کوارٹر آفس لاہور میں ہوا جس کی صدارت ڈی آئی جی آپریشنز شارق جمال نے کی اجلاس میں ڈی آئی جی ہیڈ کوارٹر جواد احمد ڈوگر‘ اے آئی جی ایڈمن سید حماد حیدر‘ ایس ایس پی ملتان حسن رضا‘ ایس پی لاہور راجہ ظہیر سمیت ڈویژنل پولیس افسران اور ریلوے کی جانب سے ڈپٹی سی او پی ایس محمود احمد لاکھوں نے شرکت کی۔ ڈی آئی جی آپریشنز شارق جمال نے آزادی ٹرین کی فول پروف سکیورٹی کو یقینی بنانے کے حوالے سے تمام سکیورٹی اداروں ڈی جی رینجرز‘ ایف سی سمیت متعلقہ اداروں کو فوری خطوط ارسال کرنے کی ہدایت کی۔انہوں نے ریلوے کے تمام ایس پیز کو ہدایت کی کہ وہ واپنی اپنی ڈویژن میں ٹرین کی سکیورٹی کو یقینی بنانے کے لئے خود سفر کریں اور سکیورٹی کے امور کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ حساس مقامات کی سکیورٹی کو یقینی بنانے کے لئے ضلعی پولیس کے ساتھ بھرپور رابطہ رکھا جائیگا۔ آزادی ٹرین جس شہر میں رکے گی اس اس سے پہلے ریلوے بم ڈسپوزل کا عملہ کلےئرنس سرٹیفکیٹ جاری کرے گا۔ جن بڑے ریلوے سٹیشنوں پر آزادی ٹرین قیام کرے گی وہاں واک تھرو گیٹ لگائے جائیں گے تاکہ ہر قسم کی سکیورٹی کو یقینی بنایا جائے۔

آزادی ٹرین

مزید : ملتان صفحہ آخر