شوگر ملوں نے سندھ کے بعد پنجاب میں بھی چینی کی سپلائی بند کر دی

شوگر ملوں نے سندھ کے بعد پنجاب میں بھی چینی کی سپلائی بند کر دی

لاہور)کامرس رپورٹر (شوگر ملوں نے صو بہ سندھ کے بعد پنجاب میں بھی چینی کی سپلائی مکمل طور پربند کر دی ۔ جس کے باعث اوپن مارکیٹ میں چینی کی قیمت میں سات روپے فی کلو کا اضافہ ہو گیا ہے اور چینی کی قیمت 55 روپے سے بڑھ کر 63 روپے فی کلو پر آ گئی ہے جبکہ پر چون کی سطح پر چینی قیمت 70روپے فی کلو ہو گئی ہے ۔جس کے پیش نظر شہریوں میں شدید غم و غصہ جبکہ حکومت ،فو ڈ اتھارٹی اور پر ائس کنٹرول کمیٹی خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے ۔واضح رہے کہ شوگر ملز اور حکومت کے درمیان گزشتہ دو ہفتوں سے چینی کی برآمد کے حوالے سے تنازعہ چل رہا ہے ۔ ملک میں وافر چینی موجود ہونے کے باعث ملیں چینی برآمد کرنے کی طلب دار ہیں ۔ حکومت نے زبانی اجازت تو دے دی ہے لیکن نوٹیفیکیشن جاری نہیں کیا جا رہا ۔ شوگر ملوں نے حکومت کی جانب سے زبانی اجازت کے بعد برآمدی آڈر لے لئے تھے لیکن نوٹیفیکیشن جاری نہ کئے جانے کے باعث ان کے آڈر منسوخ ہو ر58ہے ہیں ۔ اس عرصے میں عالمی مارکیٹ میں چینی کی قیمت میں بھی کمی ہو گئی ہے جس پر شوگرملز حکومت سے برآمد پر سبڈی مانگ رہے ہیں ۔ ان مطالبات کے باعث شوگر ملز نے سپلائی بند کر دی ہے سات دن قبل سندھ کی ملوں نے سپلائی بند کی تھی اور صرف گوداموں سے سپلائی جاری تھی ۔ گزشتہ روز سے ملوں نے سپلائی مکمل بند کر دی ہے ۔ شو گر ملز ذرائع کے مطابق شوگر ملوں کے پاس چینی کا سٹاک 2018تک وافر مو جود ہے اور اضافی چینی برآمد کر نے کے لیے حکومت جلد از جلد نو ٹیفیکیشن جاری کر ے کیو نکہ کرشنگ کے سیزن دوبارہ شروع ہو نے سے وافر چینی سٹاک نہ کر سکے گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ شو گر ملوں نے اوپن مارکیٹ میں چینی کی سپلائی بند نہ کی ہے تاہم شو گر ڈیلرز مافیا نے چینی کی قیمت میں مصنوعی اضافہ کر کے اوپن مارکیٹ میں چینی قیمت میں اضافہ کر دیا ہے ۔

مزید : صفحہ آخر