جندول گرڈ سٹیشن پر کام کا آغاز

جندول گرڈ سٹیشن پر کام کا آغاز

جندول(نمائندہ پاکستان ) تمام افواہیں دم توڑ گئی ، دو حکومتیں گذرنے کے بعد تیسری حکومت نے جندول بجلی گریڈ سٹیشن پر تعمیراتی کام کا آغاز کر دیا ہے ، واپڈاء حکام کو مجبور کرینگے کہ وہ کام مقررہ وقت سے پہلے مکمل کریں تاکہ سب ڈویژن جندول کا دیرینہ مسئلہ حل ہو ، ایم پی اے اعزاز الملک افکاری ، تفصیلات کے مطابق ایم ایم اے دور حکومت میں26کروڑ روپے کی خطیر لاگت سے منظور شدہ جندول گریڈ سٹیشن طور قلعہ پر پندرہ سال سے زیادہ عرصہ گذرنے کے بعد جماعت اسلامی کے ممبران کی سر توڑکوششوں سے تعمیراتی کام کا آغاز کر دیا گیا ہے، اس حوالہ سے جندول پریس کلب کے صحافیوں سے گفتگوں کرتے ہوئے ایم پی اے اعزاز الملک افکاری ،تحصیل ناظم ثمرباغ سعید احمد باچہ اور تحصیل ناظم منڈا ہمایون خان کا کہنا تھا کہ زمین نہ ملنے اور قانونی پیچیدگیوں کی وجہ سے گریڈ سٹیشن پر تعمیراتی کام کا آغاز نہیں ہو سکا تھا البتہ اس بار امیر جماعت اسلامی سراج الحق اور دیگر مشران کی ذاتی دلچسپی کے پیش نظر کریڈ سٹیشن کے تمام معاملات خوش اسلوبی کیساتھ نمٹائے گئے ہیں ،انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں انتظامیہ نے بھی بھر پور تعاون کرتے ہوئے گریڈ سٹیشن کیلئے منتخب زمین سے افغان مہاجرین کو ہٹا کر انہیں متبادل جگہ فراہم کی جس کی وجہ سے گریڈ پر تعمیراتی کام ممکن ہو سکا ہے ، انہوں نے کہا کہ گریڈ سٹیشن کی تکمیل کیلئے دو سال مدت مقرر کر دی گئی ہے تاہم واپڈاء حکام سے درخواست اور ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کیساتھ اپیل کرتے ہیں کہ جندول میں بجلی بحران ،کم وولٹج اور بجلی نمبر پر تقسیم ہونے جیسے سنگین مسائل کو مد نظر رکھتے ہوئے یہ کام ایک سال کے اندر اندر مکمل کیا جائے جو کہ ناممکن نہیں ، انہوں نے کہا کہ جندول گریڈ سٹیشن جماعت اسلامی کے قائدین کا دیرینہ خواب تھا جو کہ بہت جلد پایہ تکمیل تک پہنچ جائے گا جس سے جندول روشنیوں کا شہر بن جائے گا۔

 

مزید : پشاورصفحہ آخر