عوام کو اپنے مینڈیٹ کا احترام خود کرانا ہوگا، جلد اپنے لائحہ عمل کا اعلان کروں گا: نواز شریف

عوام کو اپنے مینڈیٹ کا احترام خود کرانا ہوگا، جلد اپنے لائحہ عمل کا اعلان ...
عوام کو اپنے مینڈیٹ کا احترام خود کرانا ہوگا، جلد اپنے لائحہ عمل کا اعلان کروں گا: نواز شریف

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

جہلم (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ مجھے اقتدار کا شوق نہیں ، میں اپنے گھر جا رہا ہوں بلکہ مجھے گھر بھیجا جا رہا ہے ، عوام نے مجھے منتخب کروا کر اسلام آباد بھیجا مگر اسلام آباد والوں نے گھر بھیج دیا ہے،پانچ معز ز ججوں نے کروڑوں عوام کے مینڈیٹ کو بہ یک جنبش قلم ٹھکرا دیا گیا ہے ،کیا کوئی ایسا معز ز ججز ہے جو آئین اورقانون توڑنے والے ڈکٹیٹر کو گرفت میں لے سکے، عوام کے ووٹوں کی توہین کی جارہی ہے عوام کو اپنے مینڈیٹ کا احترام کرانے کے لئے خود آگے بڑھنا ہوگا ، بہت جلد اپنا پروگرام اور ایجنڈہ آپ کے سامنے پیش کروں گا ۔اپنے مینڈیٹ کا احترام کرانے کے لئے اہل جہلم کو میرا ساتھ دینا ہوگا۔

جی ٹی روڈ پرریلی رواں دواں، عوامی مینڈیٹ کی توہین برداشت نہیں,ہم مل کر نیا پاکستان بنائیں گے : نوازشریف

سابق وزیر اعظم نواز شریف مشن جی روڈ کے دوران جہلم پہنچ گئے ہیں جہاں انہوں نے عوام کے جم غفیر سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) نے ملک کو ترقی کی ڈگر پر چلا دیا تھا مگر ایک منٹ میں کروڑوں عوام کے ووٹوں کی توہین ہے کرتے ہوئے پانچ معزز ججزنے بہ یک جنبش قلم آپ کے وزیر اعظم کو چلتا کردیا ،انہوں نے سوال پوچھا کہ کیا آپ کو اپنے ووٹوں کی یہ توہین برداشت ہے؟ آپ کو ججوں سے پوچھنا چاہئے کہ نواز شریف کو کیوں نکالاجبکہ معزز ججز نے خود تسلیم کیا کہ نواز شریف نے کوئی کرپشن نہیں کی ۔ الحمد للہ! یہ گریبان اور ہاتھ صاف ہے یہ دل کرپشن سے پاک اور پاکستان کی محبت میں ڈوبا ہوا ہے، میں نے دیانتداری سے ملک کی خدمت کی ، مجھ پر کرپشن ، کمیشن اور کک بیک کا دھبہ نہیں ہے۔ مجھے کرپشن کے الزامات پر نااہل نہیںکیا گیا بلکہ کہتے ہیں کہ نواز شریف نے اپنے بیٹے سے تنخواہ کیوں نہیں لی بیٹے سے کوئی تنخواہ لیتا ہے، اگر بیٹے سے تنخواہ نہیں لیتی تو اس سے آپ کو کیا لینا دینا؟70سالوں سے اس ملک کے ساتھ مذاق ہوتا آرہا ہے قوم کا استحصال ہو تا آرہا ہے، کتنے افسوس کی بات منتخب وزرائے اعظم کو ایسے چلتا کردیا جاتا ہے یہ وزیر اعظم کی توہین نہیں بلکہ پاکستان کے بیس کروڑ عوام کی توہین ہے۔آپ ووٹ دیتے ہیں تو ایک ڈکٹیٹر اور جج آپ کے ووٹ کی پرچی پھاڑ کر آپ کے ہاتھ میں دے دیتا ہے ، اگر پاکستان نے آگے جانا ہے تو اس دستور کو بدلنا ہوگا۔

نوازشریف کے قافلے میں تیزی سعد رفیق کو ملنے والے خفیہ پیغام کے باعث آئی :بی بی سی

نواز شریف نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ 2013 ملک اندھیروں میں ڈوب چکا تھا اور غریب کا کوئی والی وارث نہیں تھا کاشتکاروں کے ٹیوب ویل بند ہوچکے تھے بجلی نہ ہونے کی وجہ سے کاروبار بند ہو چکا تھا، آپ جانتے ہیں کہ سی این جی سٹیشنوں پر لمبی لمبی قطاریں لگی ہوتی تھیں لوگ بے روزگار ہو رہے تھے، میں نے آپ سے وعدہ کیا تھا،اپنی بہنوں بیٹیوں اور ماﺅں سے وعدہ کیا تھا کہ ملک کو ترقی کی جانب لے کر جا ئیں گے اور ملک سے اندھیروںکا خاتمہ کروں گا اور اس دیس کی روشنیاں واپس لاﺅں گا۔آپ جانتے ہیں کہ دن رات ایک کرکے بجلی کے کارخانے لگائے اور اربوں روپے کی بچت کی اور انشاءاللہ اگلے سال لوڈشیڈنگ کو ہمیشہ کے لئے ختم کردیا جائے گا ۔ آپ سے وعدہ کیا تھا کہ ملک میں امن لاﺅں گا ، اسی وعدے کی تکمیل کرتے ہوئے چارسالوں میں کراچی کی روشنیاں واپس لائیں، بلوچستان کے اندرامن لائے یہاں کی جماعتیں جو کسی اور طرف جا رہی تھیں ، انہیں پاکستان کی طرف لائے۔ جب ہم اقتدار میں آئے تو بلوچستان ڈوب رہا تھا ، کراچی تباہی کے دہانے پر تھا،ہم بھرپور کوششوں سے کراچی کی روشنیاں واپس لائے اور بلوچستان میں امن کی دیپ جلائے۔ اگر پاکستان میں یہ ترقی کا عمل جاری رہتا تو ایک ایک بیروزگار نواجوان کو باعزت روزگا ر میسر آتا، مجھے اپنی نہیں ان نوجوانوں کی فکر ہے کہ ان کا مستقبل تاریک نہ ہو جائے،نوجوانو! مایوس نہ ہونا نواز شریف کی دعائیں تمھارے ساتھ ہیں،مجھے اقتدار کی پروا ہ نہیں ہے مجھے اقتدار کا شوق نہیں آپ کی تقدیر بدلنے کا شوق ہے۔ ملک میں کوئی عدالت ہے جو آئین اور قانون توڑنے والے ڈکٹیٹرز کوپکڑ سکتا ہے،پاکستان اوپر آرہا تھا مگر اس کا گلہ دبایا جا رہا ہے۔انہوں نے جلسے کے شرکاءسے وعدہ لیتے ہوئے کہا کہ مجھ سے وعدہ کرو کہ ان سب باتوں کا حساب لو گے، اگر اب حساب لو گے کہ ملک تباہی سے بچ جائے گا ہم نے آج اس ملک کے بارے میں سوچنا ہے،قانون کی حکمرانی یقینی بنانا ہے اور اپنے مینڈیٹ کا احترام کرنا ہوگا۔

مریم نوازایک بار پھر میدان میں آ گئیں ،پیغام جاری کر دیا

نواز شریف کا مزید کہنا تھا کہ میںنے آپ کے لئے کام شروع کیا تو دھرنے والے آگئے اس کے بعد مولوی صاحب آگئے ان مولوی صاحب کو ہر تین مہینے بعد پاکستان کا درد جاگتا ہے جبکہ انہوں نے ملکہ برطانیہ سے وفاداری کا حلف اٹھایا ہوا اور نہ جانے کون سے لوگ ہیں جو ان کے پیچھے لگ جاتے ہیں۔ملک کو ترقی سے روکنے والے لوگوں کا بائیکاٹ کرتے ہوئے انہیں ناکام بنانا ہوگا۔

نوازشریف سے پہلے ان کا باورچی ہوٹل پہنچ گیا ،کھانے کا اہتمام شروع کر دیا

اس قبل نواز شریف نے آج راولپنڈی سے اپنے جی ٹی روڈ مشن کے دوسرے دن کا آغاز کیا ، راستے میں جگہ جگہ لیگی کارکنان ان کے استقبال کے لئے موجود تھے مگر سابق وزیر اعظم کے قافلے نے کہیں پڑاو نہیں کیا بلکہ 120 کلومیٹر کی رفتار سے قافلہ چلتا رہا ، لیگی کارکنان ان کے ساتھ شامل ہوتے گئے تاہم انہوں نے دینہ میں مختصر خطاب کیا اور اپنے خلاف کئے جانے والے اقدامات کو تنقید کا نشانہ بنایا ، نواز شریف کا قافلہ آج جہلم میں قیام کرے گا اور وہیں سے اگلی منزل کی جانب کل (جمعہ ) کو لاہور کی جانب روانہ ہوگا۔

مزید : قومی /اہم خبریں