کم اور متوسط طبقے کے لئے رہائشی منصوبہ ”اپنا گھر ہاﺅسنگ سکیم“ کی سفارشات جلد پیش کی جائیں: شاہد خاقان عباسی

کم اور متوسط طبقے کے لئے رہائشی منصوبہ ”اپنا گھر ہاﺅسنگ سکیم“ کی سفارشات ...
کم اور متوسط طبقے کے لئے رہائشی منصوبہ ”اپنا گھر ہاﺅسنگ سکیم“ کی سفارشات جلد پیش کی جائیں: شاہد خاقان عباسی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ کم اور متوسط طبقے کے لئے رہائشی منصوبے”اپنا گھر ہاﺅسنگ سکیم“کی سفارشات کو فی الفور مکمل کرکے پیش کیا جائے جبکہ انہوں نے وزارت ہاﺅسنگ کو ہدایت کی ہے کہ سرکاری ملازمین کو کم لاگت کی معیاری رہائش کی فراہمی کیلئے جلد از جلد جامع منصوبہ پیش کیا جائے۔

پانامہ فیصلہ ، سیاسی صورت حال پر پارلیمنٹ کے کردار پر بحث کا فیصلہ ، اداروں کے درمیان تصادم نہیں، ڈائیلاگ کی ضرورت ہے: رضا ربانی

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت پی ایم آفس میں وزارت ہاﺅسنگ کا اجلاس ہوا جس میںوزیر ہاﺅسنگ و تعمیرات اکرم خان درانی اور وزارت کے سینئر حکام نے شرکت کی۔ وزرات ہاﺅسنگ کی جانب سے وزیر اعظم کو گذشتہ چار برسوں کے دوران وزارت کی کارکردگی اور وفاقی سرکاری ملازمین اور کم آمدنی والے طبقوں کیلئے پی ایچ اے فاﺅنڈیشن سمیت مختلف جاری منصوبہ جات کے بارے میں آگاہ کیا۔وزیراعظم کو کم اور درمیانی آمدن کے طبقہ کیلئے وزیراعظم کی کم لاگت ”اپنا گھر ہاﺅسنگ سکیم“ کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا۔ وزارت ہاﺅسنگ نے وزیر اعظم کو بریفنگ میں بتایا کہ اس سکیم کیلئے وزارتی کمیٹی نے اپنی سفارشات مکمل کر لی ہیں۔ وزیراعظم نے بین الوزارتی کمیٹی کو اس معاملہ میں مزید کارروائی کیلئے اس عمل کو تیز کرنے اور سفارشات پیش کرنے کی ہدایت کی۔دوسری جانب شاہد خاقان عباسی کوفیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہاﺅسنگ فاﺅنڈیشن کی رکنیت مہم کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا تاکہ سرکاری ملازمین کو مختلف کیٹگریز میں کم نرخوں پر رہائشی پلاٹ فراہم کئے جا سکیں۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ رہائشی پلاٹوں کی الاٹمنٹ کرتے ہوئے میرٹ کی پیروی کی جائے اور اس ضمن میں سرکاری ملازمین کو زیادہ سے زیادہ سہولت فراہم کی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ وزارت ہاﺅسنگ کو اراضی کے حصول اور ترقی، ڈیزائننگ اور تعمیرات کرتے ہوئے معیار پر سمجھوتہ کئے بغیر جدید معیارات کا اطلاق کرنا چاہئے۔

مزید : قومی /اہم خبریں