پاسپورٹ آفس ایبٹ روڈ میں ایجنٹوں کا راج کینٹین پر لوٹ مار کا انکشاف

پاسپورٹ آفس ایبٹ روڈ میں ایجنٹوں کا راج کینٹین پر لوٹ مار کا انکشاف

 لاہور(افضل افتخار ،تصاویر:ندیم احمد) پاسپورٹ آفس ایبٹ روڈ لاہور نے عوام کو خوار کرنے کی روش نہیں بدلی۔ ملک میں تبدیلی کا نعرہ لگانے والی تحریک انصاف حکومت بنانے کو تیار ہے مگر قومی اداروں میں بیٹھے کام چور افسران شاید اس کے لئے تیار نہیں۔ آفس میں روزانہ سینکڑوں لوگ آتے ہیں مگر گرمی اور حبس کے ان دنوں میں ٹھنڈے کمروں میں بیٹھے پاسپورٹ آفس اسسٹنٹ ڈائریکٹر کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ باہر بزرگ، خواتین اور بچے قطاروں میں کھڑے دھکے کھا رہے ہوتے ہیں لیکن پاسپورٹ آفس کی ملی بھگت سے ایجنٹ مافیا کے ذریعے ’’ٹوکن‘‘ کے نام پر ہیرپھیر اور اندھیر نگری کی شکایات عام ہیں، آفس میں کنٹین کے نام پر بھی لوٹ مار کا ایک بازار گرم ہے۔ پاسپورٹ کے لئے آنے والے شہریوں کی سہولت کے لئے آنے والے فنڈز بھی حکام کی جیب میں جا رہے ہیں۔ روزنامہ پاکستان کے سروے کے دوران شہریوں نے شکایات کے انبار لگا دیئے۔ گڑھی شاہو سے آئے 60سالہ قاسم علی نے کہا کہ ٹھنڈے کمروں میں بیٹھے افسران کو بزرگ شہریوں کا بھی خیال نہیں میں کتنی دیر سے لائن میں کھڑا ہوں مگر ایجنٹس کے کئی بندے اندر کھاتے کام کرا رہے ہیں کیا یہی انصاف ہے کاش نیب اور سپریم کورٹ ایسے افسران کو بھی انصاف کے کٹہرے میں لائے۔وزیر آغا نے کہا میں تین دن سے چکر لگا رہا ہوں مگر عجیب قسم کے چھوٹے چھوٹے اعتراضات لگا کر مجھے خوار کیا جا رہا ہے۔ راحیلہ نے کہا کہ میری کویت میں شادی ہوئی ابھی ہفتہ نہیں گزرا اور میں ہر دوسرے دن پاسپورٹ آفس دھکے کھانے آئی ہوں خدا ان راشی افسران کو غرق کرے۔ بابر علی ،نبیلہ اور عامرہ نے کہا کہ ہم تو یہاں پر آکرپھنس ہی گئے ہیں بار بار ہمیں کہا جاتا ہے کہ کل آجائیں، اعلی حکام اس کا نوٹس لیتے ہوئے ہماری داد رسی کریں۔ سفیہ ، نورین او ر صائمہ نے کہا کہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر اندر کمرہ میں بیٹھ کر گپیں مارنے میں مصروف ہیں اور ہم باہرگرمی سے سڑ رہے ہیں ۔

پاسپورٹ

مزید : میٹروپولیٹن 1