پنجاب یونیورسٹی سینٹ کا12برس بعد اجلاس، 9بلین روپے کا بجٹ منظور

پنجاب یونیورسٹی سینٹ کا12برس بعد اجلاس، 9بلین روپے کا بجٹ منظور

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) وائس چانسلر پروفیسر نیاز احمد اختر کی زیر صدارت 12سال بعدپنجاب یونیورسٹی سینٹ کا 351واں اجلاس اولڈ کیمپس کے سینٹ ہال میں منعقد ہوا ۔ گورنر پنجاب اور چانسلر پنجاب یونیورسٹی کی اجازت سے2007ء کے بعد منعقد ہونے والے اجلاس میں 100کے قریب سینیٹرز نے شرکت کی۔ اجلاس میں پنجاب یونیورسٹی کے گزشتہ برسوں کے بجٹ کے علاوہ سال 2018-19کے 9بلین بجٹ کی منظوری دی گئی۔ سینٹ ممبران نے ٹنیور ٹریک سٹیچوٹس ورژن 2.0کو اختیار کرنے کی منظوری، پروفیسر ایمریٹس کو اعزازیہ دینے کے لئے معیار پر نظرثانی ، ٹی ٹی ایس پر کام کرنے والے اساتذہ کی چھٹیوں، اور لیکچرار اور اسسٹنٹ پروفیسرز کی اہلیت کا معیار ایچ ای سی کے نوٹیفکیشن کے مطابق مقرر کرنے کی منظوری بھی دی گئی۔سینٹ اجلاس کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر نیاز احمد نے کہا کہ موجودہ انتظامیہ میرٹ ، گڈ گورننس ، شفافیت اور احتسابی عمل پر مکمل یقین رکھتی ہے جو یونیورسٹی میں ہر سطح پر نظر آئے گا۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کی تمام قانونی باڈیز کو متحرک کر کے دو ماہ میں اجلاس منعقد کرائے جا چکے ہیں جس سے یونیورسٹی کے معاملات کو صاف شفاف بنانے میں معاونت ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی یونیورسٹیوں کی بین الاقوامی رینکنگ میں حصہ لے گی جبکہ کیو ایس ایشیا رینکنگ کے لئے ضروری دستاویزات جمع کروائی جا چکی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی ملک اور معاشرے پر اثر انداز ہونے والی تحقیق کو فروغ دے کر ملک و معاشرے کی ترقی میں اپنا حصہ ڈالے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4