مریض کو غلط الٹرا ساؤنڈ رپورٹ جاری کرنے کے خلاف ہیلتھ کیئر کمیشن کو درخواست جمع

مریض کو غلط الٹرا ساؤنڈ رپورٹ جاری کرنے کے خلاف ہیلتھ کیئر کمیشن کو درخواست ...

لاہور(جنرل رپورٹر) الرازی ہسپتال کے ریڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے مریض کو غلط الٹرا ساؤنڈ رپورٹ جاری کرنے کے خلاف ہیلتھ کیئر کمیشن کو درخواست جمع۔تفصیلات کے مطابق فیصل ٹاؤن کے رہائشی طاہر شہباز خان نے پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کو ایم ایم عالم روڈ پر واقع دبئی گروپ کے الرازی ہسپتال کے خلاف درخواست جمع کروائی ہے جس میں موقف اختیار کیا ہے کہ دبئی گروپ کے الرازی ہسپتال میں جعلی لیباٹری رپورٹس جاری کی جاتی ہے۔3اگست 2018کو63سالہ طاہر خان الرازی ہسپتال میں الٹراساؤنڈ کروانے کی غرض سے گئے جہاں پر ڈیوٹی پر ،وجود ڈاکٹرنے مریض کا الٹراساؤنڈ کیا لیکنٍ ڈاکٹر نے الٹراساؤنڈ کرنے کے بعد جو رپورٹ جاری کی۔

اْسے دیکھ کر مریض کے ہوش اْڑ گئے کیونکہ الٹراساؤنڈ رپورٹ کے مطابق مریض کا پتہ اور پنکریاز دونوں ہی نارمل کام کر رہے ہیں جبکہ حقیقت میں ایسا ہر گز نہیں تھا۔ طاہر خان نے بتا یا کہ میر ی ہورائزن ہسپتال جوہر تاؤن کی جانب سیویپل (whipple)پروسیجر کیا جاچکا ہے اور اس پروسیجر میں مریض کے پیٹ کے کئی ا?رگن نکال لیے جاتے ہیں اور پتا اْن میں سے ایک ا?رگن ہے۔لیکن ہسپتال کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق اْن کا پتا اور پنکریازناصرف سائز میں نارمل ہیں بلکہ صحت مند بھی ہیں جبکہ حقیقت میں اْن کے پیٹ میں یہ دونوں ا?رگن موجود ہی نہیں ہیں۔طاہرخان نے بتا یا کہ وہ عرصہ کئی سال سے الرازی ہسپتال سے ٹیسٹ کرو ا رہے ہیں کیونکہ اْن کے مطابق وہ صرف کوالٹی ٹیسٹ کروانے کی غرض سے اس ہسپتال میں ا?تے رہے ہیں لیکن ا?ج پتا چلا ہے کہ اس ہسپتال میں کتنا معیاری علاج معالجہ کیا جاتا ہے۔اس حوالے سے شہری طاہر شہباز خان نے گزشتہ روز پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کو مذکورہ ہسپتال کے خلاف سخت کاروائی کے لیے درخواست جمع کروا دی ہے۔طاہر شہباز خان کے مطابق وہ انصاف کے حصول کے لیے کسی بھی فورم پر جانے کو تیار ہیں کیونکہ وہ معیاری ٹیسٹ کروانے کی غرض سے الرازی ہسپتال میں گئے تھے ورنہ یہی الٹرا ساؤنڈ عام مارکیٹ میں 5سو روپے میں کروا یا جاسکتا تھا لیکن انہوں نے ہسپتال کو 2ہزار 5سو روپے الٹراساؤنڈ کی فیس ادا کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4