حکومت اور اپوزیشن متفقہ انتخابی تحفظات کی تحقیقات کریں،پلڈاٹ

حکومت اور اپوزیشن متفقہ انتخابی تحفظات کی تحقیقات کریں،پلڈاٹ

لاہور (خصوصی رپورٹ )پلڈاٹ کی جانب سے عام انتخابات 2018 کے معیار کے جائزے پر مشتمل اسکورکارڈ جاری کردیا ہے ،اسکور کارڈ میں عام انتخابات کے میعار کے حوالے سے مجموعی طور پر 51.79 فیصد پوائنٹس اسکور دیا گیا ہے جوکہ 2013میں56.76 فیصد کے مقابلے میں 5فیصد تنزلی کا شکارہوا۔ پلڈاٹ نے سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کے اعتراضات کی دور کرنے کیلئے تحقیقات کی سفارش بھی کی ہے ۔ اس حوالے سے نو منتخب حکومت اور حزب اختلاف کو ملک بیٹھ کر تحقیقات کا طریقہ کار طے کرنا چاہیے اور ہوسکتے تو اتفاق رائے سے آزاد کمیشن بھی تشکیل دینا چاہیے ۔ پلڈاٹ کی جانب سے جاری کردہ اسکور کارڈ میں پولنگ والے دن انتظامات کو ماضی کی نسبت بہتر قرار دیتے ہوئے زیادہ64فیصد پوائنٹس اسکور دیا گیا ہے تاہم ووٹوں کی گنتی ، نتائج مرتب کرنے اور ترسیل کے حوالے سے معیار تنزلی کا شکار رہا ہے اس مد میں 40فیصد پوائنٹس اسکور دیا ہے۔ 2013کے مقابلے میں 2018کے انتخابات کے دوران پولنگ والے دن عملے کی تربیت ، انتخابی عملے کی غیر جانبداریت اور مجموعی طور پر پولنگ انتظامات کے حوالے سے بہتری دیکھنے میں آئی ہے جس پرکسی بھی حوالے سے زیادہ 64 فیصد پوائنٹس اسکوردیا گیا جوکہ2013کے 44فیصدپوائنٹس رہا ۔ اسکور کارڈ کے مطابق 2002کی نسبت مجموعی طورپر پولنگ ڈے کی انتظامات میں بہتری سامنے آئی ہے 2002اور 2008کے 40فیصد کے بعد میں 2013میں 44فیصدکی معمولی بہتری آئی ہے جبکہ 2018میں 64فیصد اسکور دیا گیا ہے ۔ رپورٹ کے مطابق میں ووٹوں کی گنتی ، نتائج کو مرتب کرنے اورترسیل کے حوالے سے کم ترین اسکور 40دیا گیا ہے جسے انتخابات 2018 کے معیار کا کمزور ترین پہلو قرار دیا گیا ہے ۔ پلڈاٹ کی جانب سے ’’عام انتخابات 2018 کے معیار کا جائزے کا اسکور کارڈ‘‘ ماضی کے انتخابات 2002، 2008اور 2013کے جائزؤں کا تسلسل ہے ۔ 2013میں قبل ازانتخابات مہیا کر دہ صورتحال پر 62فیصد پوائنٹس کے مقابلے میں 12فیصد کمی کے بعد 2018میں 50فیصد پوائنٹس ر ہ گئی ہے ۔ اس حوالے سے 2018مئی میں پلڈاٹ کی جانب سے قبل از انتخابات کو غیر شفاف قرار دیا گیا تھاجس میں خصوصی طور پر وفاقی اور صوبائی نگران حکومتوں سمیت انٹیلی جنس ایجنسیوں کی غیر جانبداریت سمیت عدلیہ کی آزادی پر سوالات اٹھے تھے ۔ پولنگ ڈے کے آپریشنز کوتسلی بخش قراردیاگیا ہے ۔انتخابات کے بعد کی صور تحال پر 50فیصدپوائنٹس دیئے گئے ہیں جبکہ2013میں 68فیصد پوائنٹس یعنی حالیہ انتخابات میں 18فیصد کمی واقع ہو ئی ہے ۔آزادامیدواروں کو مخصوص سیاسی جماعت یا جماعتیں اختیار یا شمولیت کیلئے دباؤ اسکور میں کمی کا باعث بنا ہے ۔ پلڈاٹ کی جانب سے عام انتخابات 2018 کے معیار کے جائزے پر مشتمل اسکورکارڈ ،ممتاز ماہرین اور شخصیات پر مشتمل پلڈاٹ ڈائیلاگ گروپس برائے انتخابی عمل ، معیار جمہوریت اور سول ملٹری تعلقات نے مشترکہ طو رپر تشکیل دیا ہے جس میں سابق ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل (ر) اطہر عباس، ایئر وائس مارشل (ر)شہزاد چوہدری، چیئر مین گیلپ ڈاکٹر اعجاز شفیع گیلانی سابق وزیر داخلہ معین الدین حیدر، سابق گورنر پنجاب شاہد حامد، ایڈوکیٹ سپریم کورٹ ڈاکٹر پرویز حسن، سابق وزیر اطلاعات جاوید جبار، سابق ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی وزیر جوزئی ، سابق چیف سیکریٹری رستم شاہ مہمند، ایڈیٹر پاکستان ٹوڈے عارم نظامی ، سابق وفاقی سیکریٹری تسنیم نورانی ، کالم نگار غازی صلاح الدین ، سینئر صحافی مجیب الرحمان شامی کے علاوہ پلڈاٹ کے صدر احمد بلا ل محبوب اور جوائنٹ ڈائریکٹر آسیہ ریاض شامل تھیں ۔

پلڈاٹ

مزید : صفحہ آخر