صہیونی افواج کی غزہ پر بمباری، شیرخوار بچی سمیت2حاملہ خواتین شہید ،8افراد شدید زخمی

صہیونی افواج کی غزہ پر بمباری، شیرخوار بچی سمیت2حاملہ خواتین شہید ،8افراد ...

غزہ(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)صیہونی افواج کی نہتے فلسطینیوں پر بربریت جاری ہے، غزہ پر اسرائیلی بارود نے شیر خوار بچی سمیت 2حاملہ خواتین کو موت کی گہری نیند سلا دیا جبکہ 8فلسطینیوں کو شدید زخمی کر دیا،زخمیوں کو سپتال منتقل کر کے طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے۔ بین الاقوامی ذرا ئع ابلاغ کا کہنا ہے صیہونی افواج کے فضائی حملے میں محکمہ صحت غزہ کے مطابق شہید ہونیوالوں میں 2حاملہ خواتین اور ایک 18 ماہ کی بچی شامل ہے۔دوسری جانب اسرائیلی فوج نے الزام لگایا ہے حملے میں مارے جانیوالے افراد اسرائیل پر راکٹ حملے میں ملوث تھے اور ان کا تعلق فلسطینی مزاحمتی تنظیم حماس سے ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو صہیونی وزیر دفاع، فوجی اور سکیورٹی قیا دت سے تل ابیب میں وزارت دفاع کے دفتر میں مشاورت کر رہے ہیں۔ اجلاس میں غزہ کی صورتحال پر بحث اور وہاں سے مبینہ طور پر کشیدگی کو ہوا دینے کی کوششوں کا جواب دینے کی حکمت عملی پر غور کیا جا رہا ہے۔ادھر اسرائیلی لڑاکا جہازوں نے غزہ کی پٹی میں متعدد سول اور سیکیورٹی اہداف کو نشانہ بنایا۔ شمالی غزہ کے علاقے السودانیہ میں ایک فیکٹری بھی اسرائیلی بمباری کا خاص ہدف تھی۔ نیز بحری کلب کے قریب واقع غزہ میونسپلٹی کا پولیس ریسٹ ہاوس بھی اسرائیلی فضائیہ کا نشانہ بنا۔دریں اثناء غزہ سے اسرائیلی علاقے میں یہودی بستیوں پر 70 سے زائد راکٹ داغے گئے۔ اسرائیلی توپخانے کے حماس کے ایک ٹھکانے پر اس وقت گولے برسائے جب غزہ سے اسرائیلی فوج کی انجینئرنگ کور کے گاڑیوں پر فائرنگ کی گئی۔ یہ گاڑیاں اسرائیل۔غزہ سرحد پر باڑ لگا رہی تھیں۔یہ تمام پیش رفت ایک ویسے وقت میں ہو رہی ہے کہ جب غزہ کی حکمران اسلامی تحریک مزاحمت حماس قطر کی وساطت سے اسرائیل کے ساتھ سیز فائر معاہدے کیلئے مذاکرات کر رہی ہے۔ پانچ سال پر محیط سیز فائر پیکج میں قیدیوں کا تبادلہ، سرحدی راہداریوں کھولنے، غزہ میں ہوائی اڈا اور بندرگاہ کی تعمیر جیسے امور شامل ہیں ۔ فلسطینی ذرائع کا کہنا تھا حماس نے اصولی طور پر سیز فائر اور سکیورٹی انتظامات کی تفصیلات پر رضامندی ظاہر کی ہے۔

مزید : صفحہ آخر