تحریک انصاف کو پنجاب اسمبلی میں 34 مخصوص نشستیں ملنے کا امکان

تحریک انصاف کو پنجاب اسمبلی میں 34 مخصوص نشستیں ملنے کا امکان

لاہور(نمائندہ خصوصی) پاکستان تحریک انصاف کو پنجاب اسمبلی میں سب سے زیادہ 34 مخصوص نشستیں ملنے کا امکان، مسلم لیگ ن کو 29 پیپلزپارٹی اور ق لیگ کے حصے میں 3 نشست ملنے کا امکان ، تحریک کی سعدیہ سہیل رانا کے علاؤہ 33 نئی خواتین پنجاب اسمبلی کا حصہ بنیں گی، تفصیلات کے مطابق الیکشن 2018 کے رزلٹ آنے کے بعد پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کی مخصوص نشستوں میں اضافہ جبکہ ن لیگ کی نشستیں کم ہوگئی ہیں پنجاب اسمبلی میں خواتین کی مخصوص نشستوں کی تعداد 66 ہے پارٹی پوزیشن کے مطابق تحریک انصاف کو 34 ن لیگ کو 29 جبکہ پیپلزپارٹی اور ق لیگ کو مجموعی طور پر 3 نشستیں ملنے کا امکان ہے تحریک انصاف کی سعدیہ سہیل رانا دوسری مرتبہ جبکہ 3 3نئی خواتین پنجاب اسمبلی کا حصہ ہوں گی، مسلم لیگ ن کی 2013 میں 58 نشستیں تھیں جوکم ہو کر 29 رہ جائیں کی۔پیپلز پارٹی کی 2013 میں ایک ہی نشست تھی جس پر فائزہ ملک براجمان تھی اب ان کی جگہ شازیہ عابد جبکہ ق لیگ کی باسمہ ریاض اور خدیجہ عمر ایوان کا حصہ ہوسکتی ہیں۔ ن لیگ کی 29 میں سے 10 پرانی جن میں ذکیہ شاہنواز ،مہوش سلطانہ،عظمی بخاری،حنا پرویز بٹ،سعدیہ ندیم ملک، صبا صادق،راحیلہ خادم حسین،گلناز شہزادی، زیب النساء اعوان سمیت 19 نئی خواتین پنجاب اسمبلی کا حصہ ہوں گی جبکہ تحریک انصاف کی ڈاکٹر یاسمین راشد صدیقہ خاں، شمسہ علی، نسرین طارق، شمیم آفتاب، فردوس رائے،سیدہ زہرہ نقوی،عائشہ اقبال، نیلم حیات، ام المومن، عظمی کاردار، مسرت جاوید چیمہ،راشدہ ظہیر، فرحت فاروق،شاہین رضا، طلعت نقوی، ڈاکٹر شاہینہ کھوسو،عائشہ اکرم، سمعیہ طاہر، مومنہ وحید، عائشہ چوہدری، زینب عمیر، فرح آغا، ساجدہ بیگم، فرح عظمی، ساجدہ یوسف، سبین گل، سبرینہ جاوید شامل ہیں۔ تحریک انصاف نے اپنی ترجیح لسٹ میں نبیلہ حاکم ،راحیلہ انور کا نام نہیں دیا۔

مزید : صفحہ اول