بھارت ریاستی جبر چھپانے کیلئے صحافیوں کو مقبوضہ کشمیر جانے نہیں دے رہا ، دفتر خارجہ

بھارت ریاستی جبر چھپانے کیلئے صحافیوں کو مقبوضہ کشمیر جانے نہیں دے رہا ، ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا ہے کہ بھات ریاستی جبر چھپانے کیلئے صحافیوں کو کشمیر میں نہیں جانے دے رہا ،مقبوضہ کشمیر میں ایک ماہ میں 30شہری شہید اور 300سے زائد زخمی ہوئے اور 16کو حراست میں لیا گیا ، پاکستان افغانستان میں امن کا خواہاں ہے اور افغان مسئلے کے حل کیلئے تمام اقدامات کرے گا، ملیحہ لودی کی عمران خان سے ملاقات کا معاملہ دفتر خارجہ کے علم میں نہیں ،نئی حکومت آنے پر تمام نان کیرئیرسفیر مستعفی تصور ہوں گے، بیرون ملک سفیروں کی مدت میں توسیع کا فیصلہ نئی حکومت کرے گی، آئی ایم ایف کے پاس جانے کا فی الحال کوئی فیصلہ نہیں ہوا، پاک روس دفاعی تعلقات تیزی سے آگے بڑھ رہے ہیں۔ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرفیصل نے گزشتہ روزہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ بھارتی مظالم صرف کشمیر تک محدود نہیں بلکہ خود بھارت کے اندر اقلیتی برادریاں محفوظ نہیں، بالخصوص مسلم اقلیت کے ساتھ ناروا سلوک جاری ہے ،بھارتی فوج کی جانب سے ایل او سی اور ورکنگ باؤنڈری پر بھی ہٹ دھرمی جاری ہے، رواں برس میں اب تک بھارت نے 1400 سے زائد بار سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کی۔ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ دوسری جانب پاکستان پرامن ہمسائیگی پر یقین رکھتا ہے، پاکستان نے موناباؤ بارڈر خصوصی طور پر کھولا اور بھارتی خاتون کی نعش لے جانے کی اجازت دی، بھارتی ایم ایل اے نے بذریعہ خط سیکرٹری خارجہ کا شکریہ ادا کیا۔

پاکستان

مزید : صفحہ اول