مردان میں کمسن بچی سے پوسٹ مارٹم رپورٹ میں زیادتی کا انکشاف

مردان میں کمسن بچی سے پوسٹ مارٹم رپورٹ میں زیادتی کا انکشاف

مردان( بیورورپورٹ) کم سن حسینہ قتل کیس ، پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بچی سے زیادتی کا انکشاف ہواہے،درندوں نے معصوم کلی کو جنسی تشدد کے بعد بے دردی سے مسل دیاگیا پولیس نے 3مشکوک افراد کو گرفتارکرلیاگیا جبکہ70سے زائد افراد کے خون کے نمونے ڈی این اے کے لئے حاصل کرلئے گئے علاقے کی جیوفنسنگ کا عمل بھی شروع کردیاگیا،پولیس انتظامیہ نے قاتلوں کی گرفتاری میں مدد دینے والوں کے لئے 5لاکھ روپے انعام کا اعلان کردیا تفصیلات کے مطابق تحصیل کے علاقہ خادی کلے کے مقامی مدرسے کے مہتمم مفتی حبیب الرحمان کی 6سالہ بچی حسینہ گھر کے قریب سے لاپتہ ہوگئی تھی جس کی لاش دوسرے روز گھر کے قریب مکئی کے کھیتوں سے ملی جس کے ہاتھ پاؤں آزار بند سے بندھے ہوئے تھے مردان کے ڈی آئی جی محمد علی خان نے جائے وقوعہ کا دورہ کیا اور اب تک کی پیش رفت کا جائزہ لیا اسپتال ذرائع کے مطابق پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بچی سے جنسی ذیادتی کا انکشاف ہواہے جبکہ پولیس کاکہناہے کہ بچی کی موت گلہ دبانے سے ہوئی ہے ڈی پی او کیپٹن (ر) واحد محمود کے مطابق علاقے میں سرچ اپریشن جاری ہے جیو فینسنگ کا عمل شروع کیاگیاہے 70سے زائد افراد کے خون کے نمونے ڈی این اے کے لئے حاصل کرلئے گئے ہیں جبکہ تین مشکوک افراد بھی حراست میں لئے گئے ہیں واقعے کے بعد علاقے میں شدید خوف وہراس پایاجاتاہے دریں اثناء پولیس انتظامیہ کی طرف سے ملزمان کی گرفتاری میں مدددینے والوں کے لئے 5لاکھ روپے انعام کا اعلان کیا ہے اورشہر میں جگہ جگہ پوسٹر آویزاں کئے گئے ہیں جس میں ملزمان کی گرفتاری میں مدددینے والوں کے نام صیغہ راز میں رکھنے کا بھی کہاگیاہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر