مقدمات کے اندراج میں تاخیر پر ذمہ دار پولیس افسر کیخلاف فوری کارروائی کا فیصلہ

مقدمات کے اندراج میں تاخیر پر ذمہ دار پولیس افسر کیخلاف فوری کارروائی کا ...

میلسی (نما ئندہ خصوصی ) انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب ڈاکٹر سید کلیم امام نے کہا ہے کہ عوام کی سہولت کے لئے8787آئی جی پی کمپلینٹ سنٹر کو ہفتے کے ساتوں دن چوبیس گھنٹے فعال رکھا جائے تاکہ کسی بھی وقت کسی شہری کو پولیس کے حوالے سے کوئی شکایت ہو تو فوری طور پر اس کی داد رسی(بقیہ نمبر10صفحہ12پر )

کرتے ہوئے ذمہ دار افسر و اہلکار کے خلاف بروقت کاروائی کی جاسکے، انہوں نے مزید کہا کہ مقدمات کے اندراج میں تاخیر کے ذمہ دار افسران و اہلکاروں کے خلاف کاروائی میں زیرو ٹالرنس پالیسی اپنائی جائے ، خاص طور پر قتل ، ڈکیتی ، چوری اور راہزنی سمیت سنگین واقعات کے مقدمات کے اندراج میں تاخیر ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی وراگر کسی درخواست پرمقدمہ درج نہ ہو تو ایس ایچ او روزنامچے میں معقول وجہ بیان کرتے ہوئے اسکی تفصیلی رپٹ درج کرے بصورت دیگر اسکے خلاف سخت قانونی اور محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنٹرل پولیس آفس میں8787آئی جی پی کمپلینٹ سنٹر کے دورے کے دوران افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کیا۔اس موقع پرڈی آئی جی آر اینڈ ڈی بلال صدیق کمیانہ ، اے آئی جی کمپلینٹس علی جاوید ملک، اے آئی جی ڈویلپمنٹ احسن یونس اور پی ایس ٹو آئی جی پنجاب افضال احمد کوثر سمیت دیگر سینئر افسران بھی موجود تھے ۔اس موقع پر آئی جی پنجاب نے صوبہ بھر سے موصول ہونے والی عوامی شکایات اور انکے حل کیلئے ہونے والے اقدامات کا جائزہ لیاجبکہ اے آئی جی کمپلینٹ علی جاوید ملک نے آئی جی پنجاب کو 8787کمپلینٹ سنٹر کی مجموعی کارکردگی کے متعلق بریفنگ دی ۔ اس موقع پر آئی جی پنجاب ڈاکٹر سید کلیم امام نے 8787پرآنیوالی کال خود ریسو کر کے شکایت کنندہ سے اس کا مسئلہ دریافت کرتے ہوئے فوری حل کے لیے متعلقہ افسران کو ہدایات جاری کیں۔ آئی جی پنجاب نے کمپلینٹ سینٹر میں کام کرنے والے مر دو خواتین پولیس اسٹیشن اسسٹنٹ سے انکی ورکنگ کے متعلق دریافت کرتے ہوئے کہا کہ کمپلینٹ سنٹر میں موصول ہونے والی ہر کال پر سائلین کے ساتھ خوش اخلاقی سے پیش آتے ہوئے انکے مسائل کے فی الفور حل کرنے کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں اورتمام درخواستوں کے فالو اپ بھی کو ہر صورت یقینی بنایا جائے اور تین مرتبہ یاد دہانی کے باوجود جہاں شہریوں کے شکایت دور نہ ہو ایسے افسران کے خلاف مقام و مرتبہ کا لحاظ کیے بغیر محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے۔ آئی جی پنجاب نے سٹاف کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ کمپلینٹ سنٹر میں بذریعہ کال ، ایس ایم ایس ، ای میل اور ڈاک سے آنے والی تمام شکایات کو فوری حل کے لیے خلوصِ نیت سے ہر ممکن کوشش کی جائے ۔اس موقع پر انہوں نے سٹاف کے مسائل بھی دریافت کیے اور ان کے فور ی حل کیلئے موقع پر ہی احکامات جاری کرتے ہوئے کہا کہ کمپلینٹ سنٹر میں کام کرنے والی خواتین کے فریضہ نماز کی ادائیگی کیلئے الگ جگہ یا کمرہ فوری مہیا کیا جائے تاکہ دوران ڈیوٹی انہیں نماز کی ادائیگی کے حوالے سے کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ انہوں نے مزیدکہا کہ سنٹرل پولیس آفس میں کام کرنے والی خواتین کیلئے مخصوص اورعلیحدہ واش رومز کا بھی فوری بندوبست کیا جائے۔ آئی جی پنجاب نے مزید کہا کہ جہاں اس بات کو یقینی بنایا گیا ہے کہ شہریوں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل ہوں اور تھانوں میں فوری طور پر مقدمات درج کرتے ہوئے تفتیش کے مراحل کو جلد از جلد تکمیل تک پہنچایا جائے وہیں پولیس ملازمین کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرتے ہوئے انہیں دوران ڈیوٹی بہترین ماحول فراہم کرنے کیلئے تمام دستیاب وسائل کو بھی بروئے کارلایا جائے ۔

کارروائی کا فیصلہ

مزید : ملتان صفحہ آخر