ٹریفک قوانین پرعمل کرکے قیمتی جانیں بچائی جاسکتی ہیں،مقررین

ٹریفک قوانین پرعمل کرکے قیمتی جانیں بچائی جاسکتی ہیں،مقررین

حسن ابدال(تحصیل رپورٹر)نیشنل ہائی وے اینڈ موٹر وے پولیس ملک کے طول و عرض میں اپنے فرائض سر انجام دینے کے ساتھ ساتھ عوام الناس کو روڈ سیفٹی کے بارے میں آگاہی فراہم کرنا اپنا فرض سمجھتی ہے۔معاشرے کے تمام مکاتب فکر کو بلا کسی تفریق بذریعہ روڈ سیفٹی پروگرامز ۔سکول، کالجز ۔مدارس ۔یونیورسٹیوں اور سرکاری و غیر سرکاری اداروں میں سیمینار منعقد کر کے شرکاء کو دوران ڈرائیونگ احتیاطی تدابیر اور ٹریفک قوانین کے بارے میں بتایا جاتاہے تا کہ قیمتی جانوں کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اسی سلسلہ میں نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس اسلام آباد تا پشاور کے افسران کی جانب سے ویمن یونیورسٹی صوابی میں ایک روڈ سیفٹی سیمینار منعقد کیا گیا جس کا مقصد شرکاء کو وہ تمام ضروری ہدایات ۔قوانین اور تدابیر سے متعلق بتانا تھا تا کہ وہ اسے اپنا کر دوران ڈرائیونگ اپنا سفر محفوظ بنا سکیں۔ اس موقع پر موٹر وے پولیس افسران نے ملٹی میڈیا کے ذریعے تفصیلی بریفنگ دی۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے موٹر وے افسران نے کہا کہ اوور سپیڈنگ اور دورا ن ڈرائیونگ موبائل فون کے استعمال سے حادثات میں اآفہ ہوا ہے جس سے گریز کیا جانا چاہیے۔انہوں نے کہاکہ سیفٹی ہیلمٹ اور سیٹ بیلٹ کا استعمال لازمی کریں اور دیگر ٹریفک قوانین کی پاسداری کر کے اپنا قومی فریضہ ادا کیا جائے۔اس موقع پر طالبات اور دیگر شرکاء نے مختلف سوالات بھی کیے جن پر انہیں تسلی بخش جواب دیے گئے جبکہ طلبہ میں پمفلٹ بھی تقسیم کیے گئے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ویمن یونیورسٹی کی پروفیسر ڈاکٹر فاطمہ خان زادی خٹک نے موٹر وے پولیس کے روڈ سیفٹی آگاہی مہم کی تعریف کرتے ہوئے شرکاء پر زور دیا کہ وہ ان کے اس پیغام کو دوسروں تک بھی پہنچائیں تاکہ حادثات کی شرح میں کمی لائی جا سکے۔ یونیورسٹی کے وائس چانسلر اور ڈی ایس پی موٹر وے پولیس احسن خان نے ایک دوسرے کو یادگاری شیلڈ بھی پیش کیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر