عمران خان نے ۲۲سالہ طویل صبرآزما جدوجہد کی،ذاکرمنظور

عمران خان نے ۲۲سالہ طویل صبرآزما جدوجہد کی،ذاکرمنظور

مظفرآباد(بیورورپورٹ)جامع کشمیر کے سابق ممتاز طالب علم رہنما نوجوان قانون دان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما کے فرزند لیپہ کرناہ ذاکر منظور اعوان ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ پاکستان میں انتقال اقتدار کے بعد وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھال کر عمران خان ملک میں ایسی اصلاحات لائیں گے جس کیوجہ سے قومی وسائل کی منصفانہ تقسیم اور ریاست مدینہ جیسے تصور کو اپنا کر شاہانہ پروٹوکول اور اربوں روپے کے اخراجات کم کرکے تعلیم ، صحت اور روزگار کی فراہمی کو یقینی بنایا جائیگا۔نامزد وزیراعظم عمران خان نے قومی اور چاروں صوبائی اسمبلیوں کی پارلیمانی پارٹی کے قابل احترام ممبران کو اپنی پالیسیوں سے دوٹوک لائن آف ایکشن دے کر رشوت سفارش ، کمیشن کو ختم کرنے کی بنیاد رکھ دی ہے ، خیبر پختونخواہ اور پنجاب کے وزراء اعلی اور وفاقی کابینہ ٰ کی میرٹ پر نامزدگی سے مخالفین ہوش کھو چکے ہیں ،جس کیلئے قائد پاکستان عمران خان نے 22سالہ طویل صبر آزما جدوجہد کی ہے وہ گزشتہ روز میڈیا کے نمائندگان سے خصوصی گفتگو کررہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ تبدیلی جب ملک میں آتی ہے تو اس کے اثرات ہر دہلیز تک پہنچنتے ہیں اگر پنجاب میں طویل عرصے بعد مسلم لیگ ن کا تاج و تخت الوداع ہورہا ہے تو آزاد کشمیر میں کشمیر کونسل کے اربوں روپے سیاسی بنیادوں پر تقسیم کرکے قائم ہونیوالی حکومت کے دن گنے جاچکے ہیں ۔ مسلم لیگ ن کی حکومت کا جانا ٹھہر گیاہے صبح گئی کہ شام گئی ۔ ذاکر منظور ایڈووکیٹ نے کہا کہ اگرچہ تحریک انصاف غیر جمہوری مداخلت کے کلچر کو کسی صورت پروان نہیں چڑھائی گئی مگر جس حکومت کے اپنے وزراء کابینہ سے استعفیٰ دیتے ہوں اور اندرون خانہ فاروڈ بلاک تبدیلی کیلئے بے تاب ہوکر خود رابطے کررہا ہو اس حکومت کو کس طرح بچانا ممکن ہوسکتا ہے اس لئے یہ بھی سب سے بڑا اعزاز چیئرمین عمران خان کے حصے میں آتا ہے کہ یوم جشن آزادی پاکستان کے مہینے میں وہ وزارت عظمیٰ کا حلف اٹھا کر دنیا بھر میں پاکستان کا نام روشن کرتے ہوئے خدمت خلق کرینگے ۔ انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر میں قائد کشمیر بیرسٹر سلطان محمود کی جمہوری جدوجہد اور عالمی سطح پر مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کی بناء پر انہیں قومی کشمیر کمیٹی کا چیئرمین منتخب کرکے حق خودارادیت کو سفارتی محاذ پر اجاگر کیا جانا قومی مفاد کیلئے ناگزیر ہے جس کیلئے پاکستان سے زیادہ وہ عالمی سطح پر خدمات سرانجام دے سکتے ہیں ۔ذاکر منظور نے کہا کہ وفاقی حکومت میں اقتدار منتقلی کا عمل مکمل ہونے کے بعد لیپہ ٹنل کی تعمیر کے لئے ہر فورم پر جدوجہد کے ذریعے اپنا کردار ادا کرنا ہماری مٹی کا قرض بھی ہے اور ہمارے ایمان کا حصہ بھی ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر