محمود خان نے ملا کنڈ ڈویژن سے پہلے وزیر اعلٰی کا اعزاز حاصل کر لیا

محمود خان نے ملا کنڈ ڈویژن سے پہلے وزیر اعلٰی کا اعزاز حاصل کر لیا

مٹہ (رحیم خان سے) نامزد وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کا تعلق سوات کے تحصیل مٹہ سے ہے وہ 1972ء کو ڈاکٹر محمد خان کے گھر پیدا ہوئے اس نے ابتدائی تعلیم سوات کے علاقہ خوازہ خیلہ میں سرکاری سکول سے کی بعد میں میٹرک اور ایف ایس سی کی تعلیم پشاور پبلک سکول سے حاصل کی جبکہ ایم ایس سی ایگریکلچر کی ڈگری پشاور یونیورسٹی سے مکمل کی وہ 2008ء میں بلدیاتی انتخابات میں آزاد حیثیت سے یونین کونسل ناظم یو سی خریڑئی منتخب ہوئے ان کا خاندان پہلے پی پی پی میں تھے لیکن 2012ء میں انہوں نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی 2013ء میں پاکستان تحریک انصاف کی نشست سے صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے 84 جو اب نئے مردم شماری میں یہ حلقہ پی کے 9 بن گیا ہے سے صوبائی اسمبلی کے ممبر منتخب ہوئے‘ 2013ء کے دوران محمود خان دو ماہ کیلئے صوبائی وزیر داخلہ رہے‘ 2013 سے 2015 تک صوبائی وزیر ایری گیشن رہے 2013 سے 2015 سے 2018ء تک وہ صوبائی وزیر کھیل و ثقافت‘ سیاحت اور یوتھ افیئر رہے اس کا ایک بھائی عبداللہ تحصیل ناظم مٹہ ہے اور دوسرا بھائی احمد خان ضلعی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ہے‘ چچا سخی قیام پاکستنا سے قبل ہی علاقہ کی اہم سیاسی شخصیت تھی والد ایم ایس و ایجنسی سرجن بھی ہے‘ خیبر پختونخوا کے نامزد وزیر اعلیٰ ارب پتی نکلے‘ 2 ارب 54 کروڑ 67 لاکھ کے اثاثے‘ چار کروڑ بینک بیلنس‘ 87 کنال زرعی اراضی اور درجنوں کمرشل دکانات جبکہ اہلیہ کے پاس درجنوں تولے سونا اور کروڑوں روپے کی فرنیچر بھی موجود ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر