عازمین حج بائیو میٹرک تصدیق کی آڑ میں بھارتی کمپنی کو فیس کے نام پر کروڑوں دینے پر مجبور

عازمین حج بائیو میٹرک تصدیق کی آڑ میں بھارتی کمپنی کو فیس کے نام پر کروڑوں ...

ملتان (نیوز رپورٹر) سعودی وزارت حج و اوقاف کی جانب سے عمرہ زائرین و ورک ویزہ ہولڈرز کے بعد عازمین حج کیلئے بھی بائیو میٹرک تصدیق کو لازمی قرار دینے کے عمل نے ویزہ اجراء کے عمل کو سست کرنے سمیت فی کس ایک ہزار روپے فیس نے عازمین حج پر اضافی بوجھ ڈال دیا ہے جس پر عازمین حج سراپا احتجاج ہیں۔ مصدقہ ذرائع کے مطابق ہر سال پاکستان سے لاکھوں کی تعداد میں عمرہ زائرین حجاز مقدس فریضہ عمرہ ادائیگی کیلئے جاتے ہیں اور اڑھائی سے تین لاکھ عازمین حج اس اہم اسلامی فریضہ کی ادائیگی کیلئے حجاز مقدس پہنچتے ہیں جو ٹریولنگ‘ خریداری‘ رہائشی اور وزارت حج کی مقررہ فیسوں کے علاوہ صرف بائیومیٹرک تصدیق کیلئے مزید کروڑوں روپے سالانہ سعودی وزارت حج کی نامزد کمپنی اعتماد کو ادا کرنے پر مجبور ہیں اور ستم ظریفی یہ ہے کہ عمرہ زائرین‘ ورک ویزہ ہولڈرز اور عازمین سے ایک ہزار روپے فی کس وصولی کے باوجود سعودی عرب پہنچنے پر دوبارہ بائیو میٹرک تصدیق کی جاتی ہے جس اعتماد نامی کمپنی کو سعودی وزارت حج نے نامزد کیا ہے سعودی عرب پہنچنے کے بعد اسی کمپنی کی بائیومیٹرک تصدیق کو تسلیم نہیں کیا جاتا۔ پچھلے چند سالوں سے سعودی وزارت حج و اوقاف کی جانب سے پاکستانی عمرہ زائرین و عازمین حج کیلئے دانستہ مشکلات و مالی بوجھ بڑھانے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے جو اسلامی و اخلاقی حوالے سے کسی صورت جائز نہیں ہے۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ چند سال سے ورک ویزہ ہولڈرز سے پاکستان میں سعودی ایجنسی کے نامزد میڈیکل سنٹر سے میڈیکل سرٹیفکیٹ کی آڑ میں ہزاروں روپے بٹورنے کا سلسلہ جاری ہے اور مضحکہ خیز صورتحال یہ ہے کہ اس سرٹیفکیٹ کو خلیجی ممالک میں بالخصوص سعودی عرب میں قبول نہیں کیا جاتا اور ازسرنو میڈیکل چیک اپ کیلئے مزید ریال خرچ کرنے پڑتے ہیں۔ واضح رہے کہ سعودی عرب کی نامزد کمپنی اعتماد بھارتی کمپنی ہے جسے دبئی سے اپریٹ کیا جارہا ہے۔

بائیومیٹرک تصدیق

مزید : کراچی صفحہ اول