چیف جسٹس ثاقب نثار نے ہفتہ یااتوارکوپمزہسپتال کے دورے کا عندیہ دے دیا

چیف جسٹس ثاقب نثار نے ہفتہ یااتوارکوپمزہسپتال کے دورے کا عندیہ دے دیا
چیف جسٹس ثاقب نثار نے ہفتہ یااتوارکوپمزہسپتال کے دورے کا عندیہ دے دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پمزہسپتال میں غیرقانونی تعیناتی کیس کی سماعت میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ڈاکٹروقارآفتاب نے اسلام آباد کی خدمت کی ہے،انہیں پولی کلینک کا بھی پروجیکٹ دے دیتے ہیں،ہفتہ یااتوارکوپمزکے دورے کا عندیہ دیتے ہوئے عدالت نے کیس کی سماعت اگست کے آخری ہفتے تک ملتوی کر دی۔

تفصیلات کے مطابق پمزہسپتال میں غیرقانونی تعیناتی کیس کی سماعت چیف جسٹس آف پاکستان میاں محمد ثاقب نثار نے سپریم کورٹ میں کی ۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ تعیناتیاں ٹھیک نہیں ہوئی تھیں۔ اس موقع پرایڈیشنل اٹارنی جنرل نے موقف اپنایاکہ ہم نے جواب جمع کرایا ہے۔ ڈاکٹروقارآفتاب نے عدالت کو آگا ہ کیا کہ پمزہسپتال میں 3 پروجیکٹ مکمل کیے ہیں۔جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ بہت سے مسائل پمز ہسپتال میں حل ہوگئے ہیں، اسلام آباد کے شہریوں کواب طبی سہولتیں بہترمل رہی ہیں،ڈاکٹروقارآفتاب نے اسلام آباد کی خدمت کی ہے،چیف جسٹس نے ہفتہ یااتوارکوپمزہسپتال کے دورے کا بھی عندیہ دے دیا۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہسپتالوں کی حالت اب بہتر ہورہی ہے لیکن پولی کلینک میں ابھی تک مسائل ہیں، ہم ڈاکٹروقارکوپولی کلینک کا بھی پروجیکٹ دے دیتے ہیں۔سپریم کورٹ نے پمزہسپتال میں غیرقانونی تعیناتی کیس کی سماعت اگست کے آخری ہفتے تک ملتوی کر دی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد