سندھ ہائیکورٹ نے این اے249کے نتائج کانوٹیفکیشن روکنے کی استدعامستردکردی

سندھ ہائیکورٹ نے این اے249کے نتائج کانوٹیفکیشن روکنے کی استدعامستردکردی
سندھ ہائیکورٹ نے این اے249کے نتائج کانوٹیفکیشن روکنے کی استدعامستردکردی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ ہائیکورٹ نے این اے249کے نتائج کانوٹیفکیشن روکنے کی استدعامستردکرتے ہوئے فیصل واوڈا اور دیگرکو30اگست کیلئے نوٹس جاری کردیئے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق این اے249 سے نومنتخب رکن قومی اسمبلی فیصل واوڈا کےخلاف درخواست پر سماعت سندھ ہائیکورٹ میں ہوئی۔درخواست پیپلزپارٹی کے قادرخان مندوخیل نے دائرکی ۔اس موقع پر سندھ ہائیکورٹ کے جج جسٹس محمدعلی مظہرنے درخواست گزارسے استفسار کیا کہ آپ نے ریٹرننگ افسرسے رجوع کیا؟ جس پر درخواست گزار کا کہنا تھا کہ آراونے میری درخواست مستردکردی تھی۔جسٹس محمدعلی مظہرنے ریمارکس دیئے کہ کاغذات میں تینوں ممالک کی پراپرٹی کاذکرہے،جس پر درخواستگزار نے موقف اپنایاکہ یہ پراپرٹی 65فیصد قرض پر ہے لیکن کوئی فارن اکاونٹ نہیں اور ریکارڈمیں فیصل واوڈا کے امریکی پاسپورٹ کابھی ذکرنہیں ہے ۔عدالت سے استدعا ہے کہ این اے249کے نتائج کانوٹیفکیشن روک دے۔جسے سندھ ہائیکورٹ نے مسترد کرتے ہوئے فیصل واوڈا اور دیگرکو30اگست کیلئے نوٹس جاری کردیئے ۔

مزید : قومی /جرم و انصاف /علاقائی /سندھ /کراچی