سعودی عرب میں کام کرنے والی غیر ملکی ملازمہ، صرف 8 ماہ بعد ہی کفیل نے زندگی کی سب سے بڑی خوشخبری دے دی، اچانک اس کے۔۔۔

سعودی عرب میں کام کرنے والی غیر ملکی ملازمہ، صرف 8 ماہ بعد ہی کفیل نے زندگی کی ...
سعودی عرب میں کام کرنے والی غیر ملکی ملازمہ، صرف 8 ماہ بعد ہی کفیل نے زندگی کی سب سے بڑی خوشخبری دے دی، اچانک اس کے۔۔۔

  

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک)سعودی عرب میں غیر ملکی ملازمین کے ساتھ بدسلوکی کی خبریں تو آپ نے بہت سنی ہوں گی لیکن آج یہ اچھی خبر بھی سن لیجئے، جو دراصل اتنی اچھی ہے کہ یقین کرنا ہی مشکل ہو جائے۔ یہ ایک فلپائنی خاتون کا قصہ ہے جس کا کہنا ہے کہ کفیل اور اس کے خاندان نے اس پر اتنی نوازشات کر دی ہیں کہ جان کا شمار ہی ممکن نہیں۔

مہائی سان پیڈرو نامی اس فلپائنی خاتون نے ”فلپینو ٹائمز“ سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ان کے کفیل نے ان کی خدمات سے خوش ہوکر انہیں بے شمار تحائف دئیے ہیں جن میں عالمی شہرت یافتہ کمپنی بربیری کے ڈیزائنر بیگ، جوتے، اور مائیکل کورس، ٹوری بورش اور گوچی کے ملبوسات اور دیگر تحائف شامل ہیں۔ ان تحائف کے علاوہ اسے 34ہزار ریال کی رقم بھی دی گئی ہے۔

مہائی کا کہنا ہے کہ وہ خود کو بے حد خوش قسمت سمجھتی ہے کہ اسے ایسا کفیل ملا ہے جو اسے اپنے گھر کے فرد کی طرح سمجھتا ہے۔ تین بچوں کی والدہ فلپائنی خاتون نے مزید بتایا کہ ان کے پاس اپنا گھر نہیں تھا اور ان کے کفیل نے گھر بنانے کیلئے بھی انہیں رقم دی ہے۔ ان کی چھوٹی بچی شدید بیمار ہوئی تو اس کا علاج بھی کفیل نے کروایا۔ باوجود اس کے کہ ابھی انہیں اس کفیل کے ہاں کام کرتے ہوئے آٹھ ماہ ہی گزرے ہیں مگر اس مختصر عرصے کے دوران ہی اتنی نوازشات ہوچکی ہیں کہ جن کا شمار نہیں۔ مہائی نے اپنے کفیل کے خاندان کو ایک مہربان خاندان کی خوبصورت اور شاندار مثال قرار دیا ہے، جس کے لئے کام کرنا وہ باعث فخر سمجھتی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /عرب دنیا