پرائیویٹ افراد پر مشتمل گینگ کا  تھانہ کینٹ پر راج، تھانیدار اور ملازمین حالات سے لبرداشتہ،ذرائع

    پرائیویٹ افراد پر مشتمل گینگ کا  تھانہ کینٹ پر راج، تھانیدار اور ملازمین ...

  

ملتان(وقائع نگار) پولیس تھانہ کینٹ میں پرائیوٹ افراد پر مشتمل گینگ کی تھانے کے انتظامی امور چلانے اور سائلین سے ڈیلکرنے بارے شکایت سامنے آئی ہے۔ ایس ایچ او کینٹ کا شہریوں سے اور اپنے پیٹی (بقیہ نمبر13صفحہ6پر)

بھائیوں سے ہتک آمیز رویہ برقرار۔ بیشتر تھانیدار اور کانسٹیبل تھانے کے حالات سے دلبرداشتہ ہوکر تبادلہ کرواگئے ہیں۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے تھانہ کینٹ میں اعجاز نامی شخص سمیت دیگر غیر متعلقہ افراد پر مشتمل ایک گینگ بنا ہوا ہے۔جو روزانہ صبح سویرے میں آکر ایس ایچ او کے کمرے میں بیٹھ جاتے ہیں جہاں وہ تھانے میں آنے والے سائلین سے کام کروانے کے حوالے سے معلومات لیکر مک مکا کرتے ہیں۔اعجاز ماسک پہن کر تھانے کے پورے احاطے میں چکر لگاتا رہتا ہے۔ہرکسی تھانیدار کے کمرے میں جاکر سرکاری کام میں مداخلت کرتا ہے۔جبکہ اس کے دیگر ساتھی علاقہ تھانہ کینٹ میں موجود جرائم پیشہ افراد سے خصوصی رابطے میں رہتے ہیں۔جو حسب ضرورت " خاص ضروریات" پوری کرتے ہیں۔اور طے شدہ معاملات کے مطابق جرائم پیشہ افراد کے خلاف  قانونی کاروائی بھی دیتے ہیں۔تاکہ الزام لگنے پر سچائی کو پس پردہ رکھا جا سکے۔ ذرائع نے مزید بتایا ہے ایس ایچ او کینٹ کا اپنے پیٹی بھائیوں اور شہریوں  کے ساتھ ناروا رویہ شدت اختیار کرتا جارہا ہے۔جس سے بدظن سے ہوکر بیشتر تھانیداروں اور کانسٹیبلوں نے اپنا تبادلہ کروا لیا ہے۔جس کے بارے  افسران کو کئی بار شکایت کی گئی۔ذرائع نے مزید اس بات کا بھی انکشاف کیا ہے کہ ایس ایچ او تھانہ کینٹ نے کار خاص ہیڈ کانسٹیبل بشیر کٹ  کو عدالتی جوابات تیار کرنے کیلئے رکھا ہوا ہے۔جس کو تھانے کے اندر کٹ وڈ کے نام سے پکارا جاتا ہے۔اسی طرح بشیر کٹ  عدالتی جوابات تیار کرنے کیلئے سائلین سے ناجائز فرمائشیں پوری کرواتا ہے۔  عوامی و سماجی حلقوں نے مذکورہ صورت حال پر ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب۔ار پی او ملتان اور سی پی او ملتان سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

دلبرداشتہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -