امریکی ہارورڈ یونیورسٹی میں موسم سرما کے داخلوں میں 20فی صد کمی

امریکی ہارورڈ یونیورسٹی میں موسم سرما کے داخلوں میں 20فی صد کمی

  

واشنگٹن (این این آئی)امریکہ کی عالمی شہرت یافتہ ہارورڈ یونیورسٹی میں کرونا بحران کے باعث اس سال موسم سرما کے دوران طالب علموں کی تعداد میں 20 فی صد کمی متوقع ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق کرونا وائرس کے پھوٹنے سے پیدا ہونے والے حالات نے ہارورڈ یونیورسٹی کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ یونیورسٹی کی خبروں کی ویب سائٹ دی ہارورڈ کرمسن کے مطابق طالب علموں کی تعداد میں اس کمی کی وجہ کروناوائرس کے پھیلا سے جنم لینے والی متعدد وجوہات ہیں۔ بہت سے طلبا و طالبات پابندیوں کی وجہ سے سفر نہیں کر سکتے یا وہ کیمپس آنا نہیں چاہتے، کیونکہ وہ وائرس سے بچنے کے لیے ہجوم میں جانے سے گریز کرنا چاہتے ہیں۔ یا پھر وہ آن لائن کلاسوں کو مخر کر رہے ہیں کیونکہ وہ اس انداز تعلیم کو اپنے لیے مناسب نہیں سمجھتے۔کرمسن کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ سال کے 6755 انڈر گریجوایٹ طالب علموں کے مقابلے میں اس سال 5231 طالب علم موسم سرما کی کلاسوں میں داخلے کا ارادہ رکھتے ہیں۔اس سال داخلہ لینے والے طالب علموں میں سے 340 نے اپنی کلاسوں کو اگلے سال تک کے لیے مخر کر دیا ہے۔ جو کل تعداد کا 20 فی صد ہے۔کرمسن کے مطابق ہر سال تقریا 80 سے 110 طالب علم اپنے تعلیمی سلسلے میں ایک سال کا وقفہ کرتے ہیں۔اس سال ہارورڈ یونیورسٹی نے اپنی تمام کلاسوں میں آن لائن تعلیم کا بندوبست کیا ہے۔ 

ہارورڈ یونیورسٹی

مزید :

صفحہ آخر -