میرے بیٹے اور دیور کو بازیاب کرایا جائے، رخسانہ سولنگی

میرے بیٹے اور دیور کو بازیاب کرایا جائے، رخسانہ سولنگی

  

ملیر (نا مہ نگار)  میرے نوجوان بیٹے اور دیور پولیس کانسٹیبل فدا حسین سولنگی کو سادہ کپڑوں میں ملبوس پولیس اہلکار وں نے گھر سے گرفتار کرکے لاپتہ کردیا ہے، میرا بیٹا یونیورسٹی میں پڑھتا ہے، ہمیں نہیں پتہ کے ان کو کس جرم میں گرفتار کرکے لاپتہ کیا گیا ہے، ہماری حدود کے تھانہ اسٹیل ٹاؤن پر شہر کی پولیس نے انٹری نہیں کرائی ہے، میرا بیٹا اور میرا دیور بیگناہ ہیں ان فوری آزاد کیا جائے، ان خیالات کا اظہار گذشتہ رات گلشن حدید میں سے پولیس کے ہاتھوں گرفتار کیے گئے عامر علی سولنگی کی والدہ رخسانہ سولنگی اور پھپھی خالدہ سولنگی نے ملیر پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، رخسانہ سولنگی نے مزید کہاکہ میرے بیٹے عامر علی سولنگی نے انٹر پاس کرکے یونیورسٹی میں داخلہ لی ہے جبکہ میرا دیور فدا حسن سولنگی نوشہروفیروز میں پولیس کانسٹیبل ہے جن کو گذشتہ رات پورٹ قاسم کے آفیسر قیوم سولنگی کے گھر پر چھاپہ مار کر گرفتار کرکے لاپتہ کردیا گیا ہے، ہمیں پتہ نہیں ہے کہ ان کوکراچی کے کس تھانے کی پولیس نے گرفتار کیا ہے، انہوں نے کہاکہ سادہ کپڑوں میں ملبوس اہلکاروں کے ساتھ کچھ وردی والے اہلکار بھی تھے جنہوں نے گھر میں داخل ہوکر تلاشی لینے کے بعد 8موبائل فون، ایک لیپ ٹاپ بھی لیکر چلے گئے ہیں، انہوں نے کہاکہ میرا بیٹا اور میرا دیور نہ کسی جرائم پیشہ سرگرمی میں ملوث ہیں نہ ہی ان کا کسی سیاسی جماعت سے کوئی تعلق ہے، پتہ نہیں اس کے باوجود ان کو کیوں گرفتار کرکے لاپتہ کیا گیا ہے، انہوں نے کہاکہ میرا بیٹا عامر اور دیور شریف انسان ہیں ان کو بیگناہ گرفتار کرنا ہمارے ساتھ ناانصافی ہے، میں آئی جی سندھ سے مطالبہ کرتی ہوں کہ بیگناہ گرفتار کیے گئے میرے بیٹے اور دیور کو فوری بازیاب کرایا جائے۔ 

مزید :

صفحہ آخر -