سندھ میں ڈاکو ؤں کے پاس جدید اسلحہ، مقابلہ نہیں کرسکتے، وفاقی پولیس 

سندھ میں ڈاکو ؤں کے پاس جدید اسلحہ، مقابلہ نہیں کرسکتے، وفاقی پولیس 

  

اسلام آباد(آن لائن)سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ میں وفاقی پولیس نے رپورٹ پیش کر دی جس میں کہا گیا ہے کہ بیس اگست تک حتمی چالان عدالت میں پیش کردینگے، سند ھ پولیس نے اعتراف کرتے ہوئے کہا ڈاکوؤں کے پاس جدید اسلحہ ہے جس کا مقابلہ نہیں کر سکتے،رینجر سے مدد لینے کیلئے خطوط لکھ دیے ہیں،کمیٹی ارکان نے سندھ پولیس کی بے بسی پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے پولیس کو دی جانیوالی سہولیات کی تفصیلات طلب کر لی،مندر حملہ پر کمیٹی نے اظہار برہمی کا اظہار کیا اور کہا ملزموں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے، مز ید برآں چیئرمین کمیٹی نے گزشتہ تین سال میں خواتین پر ہونیوالے تشدد سے متعلق بھی وفاقی پولیس سے رپورٹ طلب کر لی، اجلاس میں کوویڈ 19 (ذخیرہ اندوزی کی روک تھا م)بل2021،اسلام آباد کیپٹل ٹیرٹری چیریٹیز رجسٹریشن ریگولیشن بل2021 کے علاوہ سینیٹر سید فیصل سبزواری کی جانب سے 16 جولائی2021 کو منعقدہ سینیٹ اجلاس میں اٹھا ئے گئے عوامی اہمیت کے معاملہ برائے نادرا کے افسران کی جانب سے دہشت گردوں، کالعدم تنظیموں اور ایلین کوسندھ میں نادرا شناختی کارڈجاری کرنے،سینیٹر محمد طلحہ محمود کی جانب سے نادرا سے جاری ہونیوالے غیر ملکیوں کو شناختی کارڈ کے اجراء کے حوالے سے تفصیلات کے علاوہ اشتیاق علی ابڑو کے بہیمانہ قتل کے حوالے سے عوامی عرضداشت اور چیئرمین سینیٹ کی جانب سے بھیجی گئی عوامی عرضداشت برائے سندھ پولیس کے نامناسب اور غیر ذمہ دارانہ رویے کی بدولت صوبہ سندھ میں امن وامان کی بگڑتی ہوئی صورتحال کا تفصیل سے جائزہ لیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز سینٹر محسن عزیر کی زیر صدارت داخلہ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں قائد حزب اختلاف سینیٹ سینیٹر سید یوسف رضا گیلانی، سینیٹرز رانا مقبول احمد، اعظم نذیر تارڑ، سیف اللہ ابڑو، ثمینہ ممتاز، شہادت اعوان، محمد طلحہ محمود، فوزیہ ارشد، سید فیصل علی سبز واری، سرفراز احمد بگٹی اور دلاور خان کے علاوہ سیکرٹری داخلہ، ایڈیشنل سیکرٹری داخلہ، چیئرمین نادار، ڈپٹی ڈرافٹ میں وزارت قانون، ڈی آئی جی اپریشنز اسلام آباد، ڈائریکٹر ایف آئی اے، آر پی او سکھر، ڈی آئی جی حیدرآباد، ڈی آئی جی لاہور اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔چیئرمین کمیٹی نے اسلام آباد کیپٹل ٹیرٹری چیریٹیز رجسٹریشن ریگولیشن بل2021 کے حوالے سے کہا گزشتہ اجلاس میں اس بل کے حوالے سے جن تحفظات کا اظہار کیا گیا تھا ان کو دور کر لیا گیا ہے، جس پر اجلاس میں قائمہ کمیٹی نے بل کو ترمیم کیساتھ متفقہ طور پر منظور کر لیا۔کمیٹی میں کوئٹہ دھماکے کے شہدا کیلئے دعائے مغفرت اور 

ان کے لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دعا کی گئی۔

وفاقی پولیس

مزید :

صفحہ آخر -