صوبائی وزیر اسدکھوکھر کے بھائی کا قتل، سیکیورٹی میں غفلت برتنے والوں کے خلاف بڑا قدم اٹھا لیا گیا 

صوبائی وزیر اسدکھوکھر کے بھائی کا قتل، سیکیورٹی میں غفلت برتنے والوں کے خلاف ...
صوبائی وزیر اسدکھوکھر کے بھائی کا قتل، سیکیورٹی میں غفلت برتنے والوں کے خلاف بڑا قدم اٹھا لیا گیا 

  

 لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) صوبائی وزیر ملک اسد کھوکھر کے بھائی مبشر کے قتل کے معاملے میں وزیراعلی پنجاب کی ہدایت پر سیکورٹی میں غفلت برتنے والوں کے خلاف انکوائری شروع کر دی گئی۔

نجی ٹی وی ایکسپریس نیوز کے مطابق ایس ایس پی آپریشنز ندیم عباس ، ایس پی آپریشنز کینٹ صاعد عزیز، ایس پی سیکورٹی نے اپنے اپنے بیانات ریکارڈ کروائے۔ انکوائری میں ڈی ایس پی ڈیفنس اور ایس ایچ او ڈیفنس سی نے بھی پیش ہو کر بیانات ریکارڈ کروائے۔ اگلے مرحلے میں سی سی پی او لاہور سمیت دیگر اعلی افسران کو طلب کیا جا سکتا ہے۔ وزیراعلی کی سیکورٹی کے دوران بلیو بک کے ایس او پیز فالو نہیں کیے گئے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب نے تحقیقات کیلئے کمیشن تشکیل دے دیا جس کی سربراہی ڈی آئی جی رینک کے افسر کریں گے۔ تحقیقاتی کمیشن واقعے میں غفلت برتنے والے افسران کا تعین کر کے وزیر اعلیٰ کو رپورٹ پیش کرے گا۔ لاہور پولیس کے ایس ایس پی آپریشنز سمیت پانچ افسران نے کمیشن کے سامنے بیانات ریکارڈ کروادیے۔

پولیس تفتیش کاروں نے کیس میں ایک اور اہم پیشرفت کرتے ہوئے ایک اور شخص کو گرفتار کرلیا جس کی بابر سے تحقیقات جاری ہیں۔ سی آئی اے ماڈل ٹاون نے بابر نامی شخص کو گرفتار کیا۔ سی آئی اے کی حراست میں موجود ملزم عمر نے دوران تفتیش بابر کا نام لیتے ہوئے کہا تھا کہ بابر نے مجھے شادی ہال کا راستہ سمجھایا۔

مزید :

قومی -