سٹیلائٹ کارڈیک فلٹر کلینک کا آغاز مریضوں کی بہترین طبی سہولیات سے مستعار

سٹیلائٹ کارڈیک فلٹر کلینک کا آغاز مریضوں کی بہترین طبی سہولیات سے مستعار
سٹیلائٹ کارڈیک فلٹر کلینک کا آغاز مریضوں کی بہترین طبی سہولیات سے مستعار

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 گزشتہ دنوں محکمہ اسپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر کی طرف سے گورنمنٹ سید مٹھا ٹیچنگ ہسپتال میں صوبے کے پہلے اسٹیلائٹ کارڈیک فلٹر کلینک کا آغاز کیا گیا جسے اس بہترین منصوبے کا پائلٹ پراجیکٹ بھی کہا گیا ہے اس حوالے سے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر کاشف ورک سے بات کی تو انھوں نے بتایا کہ سید مٹھا ٹیچنگ ہسپتال اندورن شہر لاہور میں واقع 100بیڈز کا ہسپتال ہے جہاں پر کارڈیک،گائنی،ڈینٹل اور دیگر شعبے موجود ہیں جن کو کنسلٹنٹس اور کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کی فیکلٹی کے تعاون سے چلایا جارہا ہے، جب کوئی ٹراما یا دل کے دورے کا شکار  مریض ہمارے پاس رپورٹ ہوتا تھا تو اس کو ابتدائی طبی امداد کے بعد کارڈیالوجی ریفرکردیا جاتا تھا تاکہ اس کو علاج کی سہولیات مل سکیں اب اسٹیلائٹ کارڈ یک فلٹر کلینک کے آغاز پر دل کے مریض کی حالت کو دیکھ کر اس کی رپورٹس کو پہلے کارڈیالوجی بھیجا جائے گا تاکہ وہاں پر موجود ڈاکٹرز اس کی صحت کا تعین کرسکیں اور اسے فوری اینجو گرافی کی ضرورت ہو تو اسے ہسپتال کی ایمبولینس میں ڈاکٹر کے ہمراہ کارڈیالوجی بھیجا جائے گا تاکہ اس کا مزید علاج وہاں ہوسکے ان کا کہنا تھا کہ کارڈیک فلٹر کلینک کے منصوبے کی وجہ سے کارڈیالوجی کے لیے بنائے گئے ہسپتالوں میں مریضوں کاایک جانب رش کم ہوگا تو دوسری جانب ان کو علاج کی بہترین سہولیات ملیں گی۔جیسے چھاتی کی درد کو ہر انسان دل کی درد سمجھ لیتا ہے اور کارڈیالوجی کا رخ کرتا ہے جہاں پر مریضوں کا رش دیکھ کر ہر کوئی گبھرا جاتا ہے ان فلٹرز کلینک کے منصوبوں کی وجہ سے اس غیر ضروری رش کا خاتمہ ہوگا اور دل کے مریضوں کو ہر ممکن طبی سہولیات میسر آئیں گی۔ سید مٹھا کارڈیک اسٹیلائٹ فلٹر کلینک کے لیے ایمرجنسی ہی میں بیڈز مختص کیے گئے ہیں جن پر 24گھنٹے طبی ماہرین اپنے فرائض سرانجام دیں گے۔اس فلٹر کلینک کا آغاز نگران صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر جاوید اکرم نے کیاجبکہ اس موقع پرچیئرمین بورڈ آف مینجمنٹ پی آئی سی ڈاکٹر فرقد عالمگیر، وائس چانسلر کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمود ایاز، پرو وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اعجاز حسین اور رجسٹرار پروفیسر ڈاکٹر ریاست علی، سی ای او پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی پروفیسر ڈاکٹر احمد نعمان، ایم ایس ڈاکٹر محمد تحسین اور کارڈیالوجسٹ ڈاکٹر ناصر علی جعفری و دیگر ڈاکٹرز بھی موجود تھے۔

نگران صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر جاوید اکرم نے سیٹلائٹ فلٹر کلینک میں داخل مریضوں کی عیادت کی۔ان کا کہنا تھا کہ اندرون شہر کے ہزاروں رہائشیوں کیلئے سید مٹھا ہسپتال میں سیٹلائٹ فلٹر کلینک بہت بڑی سہولت ثابت ہو گا۔ سید مٹھا ہسپتال کے سیٹلائٹ فلٹر کلینک میں مریضوں کیلئے بہترین طبی سہولیات فراہم کی گئی ہیں اور سید مٹھا ہسپتال میں سیٹلائٹ فلٹر کلینک کی طرز کے پورے پنجاب میں کلینکس کھولے جائیں گے۔اب اندرون شہر کے رہائشیوں کو دل میں تکلیف ہونے کے بعد پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی جانے کی ضرورت نہیں ہے۔چھاتی میں درد کی وجہ سے مریض ہارٹ اٹیک تصور کر لیتے ہیں، اندرون شہر کے رہائشی سینے میں درد محسوس ہونے کے بعد علاج کیلئے سید مٹھا ہسپتال میں نئے قائم شدہ سیٹلائٹ فلٹر کلینک تشریف لائیں۔ سید مٹھا ہسپتال لاہور کے سیٹلائٹ فلٹر کلینک میں مریضوں کی سہولت کی خاطر ڈاکٹرز چوبیس گھنٹے فرائض سر انجام دیں گے اپنے خطاب میں صوبائی وزیرصحت ڈاکٹر جاوید اکرم نے ایم ایس سید مٹھا ہسپتال ڈاکٹر کاشف شہزاد ورک کو مریضوں کیلئے مزید آسانیاں پیدا کرنے کی ہدایت کی جبکہ وائس چانسلر کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمود ایاز نے کہاکہ سید مٹھا ہسپتال میں سیٹلائٹ فلٹر کلینک موجودہ حکومت کا صحت کے شعبہ میں سب سے بڑا منصوبہ ہے جو اندرون شہر کے ہزاروں رہائشیوں کو بہتر سہولت فراہم کرے گا۔اس وقت جب میں کالم تحریر کررہاہوں تو محکمہ اسپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر نے گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال شاہدرہ میں بھی سٹیلائٹ کارڈیک فلٹر کلینک کا افتتاح کردیا ہے جس میں نگران صوبائی وزیر صحت پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم،وائس چانسلر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر خالد مسعود گوندل،کارڈیالوجسٹ پروفیسر بلال محی الدین اور ایم ایس شاہدرہ ہسپتال ڈاکٹر رانا سہیل اور دیگر طبی ماہرین نے شرکت کی اس طرح لاہور ہی میں کارڈیک فلٹر کلینکس کی تعداد دو ہوگئی ہے جہاں پر ان علاقوں کے رہنے والوں کو فوری دل کے مرض کی ابتدائی طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی اور واقعی جب ایسے فلٹر کلینکس کو صوبے بھر میں قائم کیا جائے گا تو آپ دیکھیں ان کی وجہ سے دل کے لیے مختص ہسپتالوں پر ورک لوڈ کم ہوگا اور سیریس مریضوں کا علاج ترجیحی بنیادوں پر ممکن ہوسکے گا۔ 

مزید :

رائے -کالم -