انتہا پسند ہندووں کی مسلم خاندان کے ساتھ مکاری پکڑی گئی ، شرمناک الزام کا پول کھل گیا

انتہا پسند ہندووں کی مسلم خاندان کے ساتھ مکاری پکڑی گئی ، شرمناک الزام کا پول ...
انتہا پسند ہندووں کی مسلم خاندان کے ساتھ مکاری پکڑی گئی ، شرمناک الزام کا پول کھل گیا

  

نیو دہلی ( نیوز ڈیسک ) ہندوﺅں کا مسلمانوں کے خلاف تعصب صدیاں گزرنے کے باوجود کم ہونے میں نہیں آ رہا اور جب کوئی اور بس نہیں چلتا تو مکاری سے کام لینے سے بھی باز نہیں آتا۔آگرہ شہر میں شدت پسند ہندو جماعتوں دھرما جگران منچھ اور بجرانگ دل نے بھی ایسی حرکت کی ہے جو الٹا انہی کے لیے شرمندگی کا باعث بن گئی ہے۔

حافظ حسین احمد نے مودی کو بل فائٹر قراردیدیا ،جاننے کے لئے کلک کریں

ان جماعتوں نے غریب مسلمانوں کو راشن کارڈ اوردیگر امدادی سامان دینے کے بہانے ایک تقریب کا اہتمام کیا اور پھر اعلان کر دیا کہ 57 مسلمانوں نے اسلام چھوڑ کر ہندو مذہب قبول کر لیا ہے۔غریب مسلمانوں کو جب اس شیطانی حرکت کا علم ہوا تو انہوں نے نہ صرف راشن کارڈ اور امدادی سامان ان تنظیموں کے منہ پر دے مارا بلکہ میڈیا کے سامنے یہ اعلان بھی کر دیا کہ ان کے ساتھ دھوکہ کیا گیا تھا۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ مسلمان پیدا ہوئے ہیں اور ہمیشہ مسلمان ہی رہیں گے۔

ہندو تنظیمیں اپنی مکاری ظاہر ہونے پر اب دنیا کے سامنے وضاحتیں کرتے پھر رہے ہیں کہ انہوں نے ان مسلمانوں کو ہندو بنانے کی کوئی کوشش نہیں کی۔

مزید : انسانی حقوق