پا ک چین دوستی ریا ستوں کے ما بین خو شگوار با ہمی تعلقات کی بہتر ین مثال ہے،پا کستان میں تعینات چین کے سفیر سن وی ڈونگ کا تقر یب سے خطاب

پا ک چین دوستی ریا ستوں کے ما بین خو شگوار با ہمی تعلقات کی بہتر ین مثال ہے،پا ...
پا ک چین دوستی ریا ستوں کے ما بین خو شگوار با ہمی تعلقات کی بہتر ین مثال ہے،پا کستان میں تعینات چین کے سفیر سن وی ڈونگ کا تقر یب سے خطاب

  

اسلام آ باد (آ ئی این پی) پا کستان میں تعینات چین کے سفیر سن وی ڈونگ نے کہا ہے کہ پا ک چین دوستی ریا ستوں کے ما بین خو شگوار با ہمی تعلقات کی بہتر ین مثال ہے۔چینی سفیر نے جمعرات کو ایک تقر یب سے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ پا ک چین دوستی قرا قرم اور تھا ئی پہا ڑ کی بلندیوں کو چھو رہی ہے جس سے دو نوں مما لک کے عوام با ہمی طور پر مستفید ہورہے ہیں۔انہوں نے چینی دانشور کنفیو شس کا اقوال زریں بیان کر تے ہو ئے کہا کہ"مدد کر نیوا لوں کو پہاڑوں کی او نچا ئی سے بھی زیا دہ خو شی ملتی ہے"۔یہی وجہ ہے لو گ مقا می و عا لمی صو رتحا ل میں ردو بد ل کے با وجود پہاڑوں کو پسند کر تے ہیں۔انہوں نے کہا پا ک چین دوستی منفرد ہے جس کی کو ئی مثال نہیں ملتی۔انہوں نے مز ید کہا کہ با ہمی مفادات کو مد نظر رکھتے ہو ئے دو نوں مما لک نے ہمیشہ ہر معا ملہ پر ایکدو سرے کو مکمل تعاون فرا ہم کیا ہے،دونوں اطراف کی عوام با ہمی تعلقات کی قدر کر تے ہیں کیو نکہ یہ پہاڑوں کی طر ح مستحکم اور قا بل اعتماد ہے۔پا کستانی قوم تسلیم کر تی ہے کہ یہ دوستی پہاڑوں سے بھی بلند ہے۔چینی سفیر رواں ما ہ بھی ایک تقر یب سے خطاب کر تے ہو ئے خوشگوار اور بلند و بالا باہمی تعلقات کے حوا لے سے نئی اصطلا ح متعارف کروا تے ہو ئے کہا ہے کہ "یہ بہتے ہو ئے پا نی کی طر ح شفاف اور خلوص پر مبنی ہے"۔چینی سفیر نے جمعہ کو ایک تقر یب سے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ دو نوں مما لک کی عظیم دوستی پا نی کی طر ح صاف و شفاف ہے،پا نی کسی بھی شہر ت اور مقصد کو حاصل کیئے بغیر ہر چیز کیلئے مفید ہے،بلند و با لا ضا بطہ اخلاق پا نی کی طر ح ہے۔یہ صرف چینی سوچ نہیں بلکہ دو نوں مما لک کا ما بین دوستی کا مظہر ہے۔انہوں نے چین کی مشہور کہا وت کا حوا لہ دیتے ہو ئے کہا کہ سمندر مختلف در یا ؤں سے بہ کر آ نے والے پا نی کو سمو لیتا ہے اور یہ بذات خود وسیع ہو نے کی وجہ سے منفرد ہے۔انہوں نے مز ید کہا کہ اگر پا ک چین دوستی کو چین کے چینگ جیانگ اور پا کستان کے در یا ئے سندھ سے تشبیہ دی جا ئے تو دو نوں مما لک کے عوام کے دلوں میں ما بین مو جود دوستی کی گہرا ئی کا اندازہ لگا یا جا سکتا ہے۔پا کستانی عوام جیسے ہی پہچانتی ہے کہ دوسرا شخص چینی ہے تو وہ فوراً نی ہا ء اور ژائی ژائی سے مخاطب کر تے ہیں۔جیسے ندیاں مختلف سمتوں میں بہتی ہو ئی وادیوں، پہا ڑوں،جنگلات اور دور دراز کے علا قو ں سے گزر تی ہیں ویسے ہی پا کستانی عوام کی زبان،ثقافت، عادات اور ماضی بھی مختلف ہے تا ہم وہ پاک چین دوستی کے معا ملہ پر متفق ہیں۔وسیع تر اتفاق کے با عث پا ک چین دوستی بڑے در یا کی صورت میں تبد یل ہو چکی ہے جو جنگلات،میدانوں اور تمام مخلوق سے بڑی ہیں۔انہوں نے مز ید کہا کہ سینکڑوں سال قبل ایک معروف چینی مو سیقار نے اپنے نغمے "ڈائنسٹی"میں کہا کہ پا نی کی شفا فیت کے بر قرار رہنے کا باعث مختلف اطرف سے پا نی کا بہاؤ ہے۔دونوں اطراف کی نو جوان نسل پا ک چین با ہمی تعلقات میں مز ید شفاف پا نی متعارف کر وا رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پا ک چین اقتصا دی را ہداری، عوا می وفود کے تبا دلوں اور با ہمی تعاون کے منصو بوں میں وسعت کی وجہ سے ز یا دہ سے زیا دہ نو جوان پا ک چین دوستی کی حما یت میں اپنا کردار ادا کر رہے ہیں۔پا ک چین دوستی کو متعارف کروا نے کیلئے لو ہے کی طر ح مضبوط بھا ئیوں کی اصطلا ح بھی متعارف ہو ئی ہے جبکہ پا کستانی نو جوا نوں میں چینی زبان سیکھنے کا بھی شوق پیدا ہو رہا ہے۔یہ کہا جا ئے تو غلط نہ ہو گا کہ اس تعلق میں نئی روح پھو نک دی گئی ہے۔ تا ریخ بہتے ہو ئے پا نی کیطر ح ہے جو ہمیشہ آ گے کی جا نب بڑ ھتی ہے۔پر امن تر قی،عوا می خو شحا لی، جا معیت اور دونوں اطرف کی با ہمی جیت کو کبھی رو کا نہیں جا سکتا۔پا ک چین دوستی تا ریخی ر جحان کے مطا بق عظیم ہے۔دونوں اطرف کی ذمہ داری ہے کہ با ہمی تعلق میں اس رجحان کو مز ید فرو غ دیں۔

مزید : بین الاقوامی