تصدیق شدہ کاپیاں عدالت میں پیش کردیناجرم ثابت نہیں کرتا،خواجہ حارث

تصدیق شدہ کاپیاں عدالت میں پیش کردیناجرم ثابت نہیں کرتا،خواجہ حارث
تصدیق شدہ کاپیاں عدالت میں پیش کردیناجرم ثابت نہیں کرتا،خواجہ حارث

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستا ن آن لائن)سابق وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے نیب ریفرنسز میں دلائل دیتے ہوئے کہا ہے کہ حسن اورحسین نوازعدالت کے سامنے پیش نہیں ہوئے،یہ نوازشریف کاٹرائل ہورہاہے،حسن اورحسین نوازکانہیں، حسن اورحسین نوازکابیان یادستاویز بطورشواہداستعمال نہیں ہوسکتی،خواجہ حارث نے کہا کہ تصدیق شدہ کاپیاں عدالت میں پیش کردیناجرم ثابت نہیں کرتا۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم نوازشریف کیخلاف نیب ریفرنسز کی سماعت جاری ہے، احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک ریفرنسز کی سماعت کر رہے ہیں۔نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ جے آئی ٹی نے طارق شفیع ،حسن اورحسین نوازکے بیانات پرانحصارکیا،ایم ایل اے سے پہلے واجدضیاکے بیان کاکچھ حصہ پڑھناچاہتاہوں،خواجہ حارث نے کہا کہ واجدضیا کااخذ کردہ نتیجہ قابل قبول شہادت نہیں،جے آئی ٹی کے سامنے دیئے گئے بیان یہاں استعمال نہیں کئے جاسکتے۔

خواجہ حارث نے کہا کہ حسن اورحسین نوازعدالت کے سامنے پیش نہیں ہوئے،یہ نوازشریف کاٹرائل ہورہاہے،حسن اورحسین نوازکانہیں، حسن اورحسین نوازکابیان یادستاویزبطورشواہداستعمال نہیں ہوسکتی،خواجہ حارث نے کہا کہ تصدیق شدہ کاپیاں عدالت میں پیش کردیناجرم ثابت نہیں کرتا۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد