ملک بھر میں انسداد پولیو مہم شروع، پولیو فری پاکستان کی منزل زیادہ دور نہیں، ہر بچے کو پولیو کے قطرے پلائیں گے: ڈاکٹر یاسمین راشد

ملک بھر میں انسداد پولیو مہم شروع، پولیو فری پاکستان کی منزل زیادہ دور نہیں، ...
ملک بھر میں انسداد پولیو مہم شروع، پولیو فری پاکستان کی منزل زیادہ دور نہیں، ہر بچے کو پولیو کے قطرے پلائیں گے: ڈاکٹر یاسمین راشد

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) ملک بھر میں پولیو سے بچاﺅ کی پانچ روزہ قومی مہم آج سے شروع ہوگئی ہے جو 14 دسمبر تک جاری رہے گی۔ راولپنڈی، لاہور اور ڈیرہ غازی خان کے بعض علاقوں میں مثبت پولیو وائرس کے ماحولیاتی نمونے مثبت ملنے کی وجہ سے ان اضلاع کی حساس قرار دی گئی یونین کونسلوں پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب بھرمیں اس مہم کے دوران 5سال تک کی عمر کے تقریباً ایک کروڑ 91لاکھ بچوں کو پولیو سے بچاﺅ کے قطرے پلائے جائیں گے۔ وزیرصحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے تمام اضلاع کے انتظامی اور ہیلتھ افسروں کو ہدایات جاری کیںکہ انسداد پولیو مہم کی تمام تیاریاںکل (اتوار )تک مکمل کر لی جائیں اور تمام اضلاع اپنے اہداف ہر صورت میں حاصل کریں۔ پولیو ٹیمیں ہر بچے تک لازمی پہنچیں اور حفاظتی ویکسین پلائیں۔

انہوں نے اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ سرد موسم کے باعث پولےو ویکسین کی ’کولڈ چین‘ کا مسئلہ درپیش نہیں ہوگا اور ہر لحاظ سے محفوظ ویکسین ہر بچے تک پہنچے گی۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے والدین، علمائے کرام، اساتذہ، سماجی تنظیموں اور سول سوسائٹی سے اپیل کی کہ وہ پولیو سے بچاﺅ کی ویکسین کی اہمیت معاشرتی سطح پر اجاگر کریں۔ پاکستان کو پولیو کی لعنت سے بچانا ہر شہری کا عزم ہونا چاہئے، پولیو فری پاکستان کی منزل زیادہ دور نہیں۔

ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز اور کو آرڈی نیٹر ایمرجنسی آپریشن سنٹر برائے انسداد پولیو ڈاکٹر منیر احمد نے کہا کہ گزشتہ مہمات میں رہ جانے والے بچوں اور علاقوں پر خاص توجہ دی جائے گی۔ انہوں نے باور کرایا کہ ہربچے کو پولیو کا خطرہ موجود ہے مگر پولیو زےادہ تر پانچ سال سے کم عمر ایسے بچوں کو متاثر کرتا ہے جنہیں پولیو سے بچاﺅ کے قطرے نہ پلائے گئے ہوں۔ انہوں نے اس بات پر خوشی کا اظہار کیا کہ سال رواں میں ابھی تک پنجاب میںکوئی بچہ پولیوسے متاثرنہےں ہوا۔ پولیو زدہ علاقوں سے وائرس کی منتقلی روکنے کےلئے بین الصوبائی سرحدوں پر ویکسین پلانے کے لئے خصوصی پوائنٹس قائم کئے گئے ہیں جہا ں سے دوسرے صوبوں سے آنے والے بچوں کو قطرے پلائے جائیں گے۔

انسداد پولیو مہم کےلئے صوبہ بھر میں48ہزار سے زائد ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو ہر یونین کونسل میں گھر گھر جا کر پولیو سے بچا? کے قطرے بچوں کو پلائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ دنیا پولیوکے خاتمے کی طرف بڑھ رہی ہے اور پاکستان میں بھی خاطر خواہ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

مزید : قومی