نشتر شعبہ آؤٹ ڈور‘ خواتین کو ورغلا نے والا گروہ سرگرم

  نشتر شعبہ آؤٹ ڈور‘ خواتین کو ورغلا نے والا گروہ سرگرم

  



ملتان (وقا ئع نگار) نشتر ہسپتال کے شعبہ آؤٹ ڈور میں خواتین کو ورغلا کر اپنے جال میں پھنسانے والا گروہ سرگرم ہوگیا امراض چشم یونٹ کے کمرے کے باہر خواتین کو مختلف جھانسہ دیکر موبائل نمبر لینے والا نجی فارماسیوٹیکل کا نمائندہ ہسپتال سکیورٹی گارڈ کے ہتھے چڑھ گیا۔درگت بنانے کے (بقیہ نمبر50صفحہ12پر)

بعد مقامی پولیس کے حوالے کردیا گیا ہے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے نشتر ہسپتال کے شعبہ آؤٹ ڈور میں بار بار یہ شکایت موصول ہورہی ہے۔کچھ نامعلوم افراد سرکاری اوقات میں آؤٹ ڈور موجود رہتے ہیں۔جیسے ہی خواتین چیک اپ کروا کر کمرے سے باہر نکلتی ہیں۔انکو بغیر واقفیت سے روک لیا جاتا ہے۔پھر انکو مدد کرنے کی پیشکش کی جاتی ہے۔جس پر چیف سکیورٹی آفسیر کیپٹن صباحت شیر خان نے ایکشن لیتے ہوئے آؤٹ ڈور میں سکیورٹی بڑھا دی۔اور ہر مشکوک سرگرمی پر کڑی نگاہ رکھنے کی خاص ہدایت کی۔ اسی دوران آؤٹ ڈور کے شعبہ امراض چشم کے کمرے سے دو خواتین باہر نکلیں۔تو پہلے سے موجود ایک نجی فارماسیوٹیکل کمپنیکے نمائندہ جہانگیر نے دونوں خواتین کو روک لیا۔ان سے کہنے لگا کہ ڈاکٹر نے آپ کو جو دوائی تجویز کی وہ ٹھیک نہیں ہے۔لہذا میں اپکو وٹامن کے دیتا ہوں۔اور ساتھ ہی ایکسرے کی فیس بھی اس نے خود ادا کردی۔اور اپنا موبائل نمبر خواتین کو لکھوایا۔جس پر خواتین نے فوری ہسپتال انتظامیہ کو شکایت کی۔تو سکیورٹی گارڈ نے جہانگیر نامی نوجوان کو پکڑ لیا۔درگت بنائی۔اور مقامی پولیس کے حوالے قانونی کاروائی کیلئے کردیا ہے۔خواتین کا کہنا ہے کہ نشتر کے شعبہ آؤٹ ڈور میں سکیورٹی مزید سخت ہونے چاہیے کیونکہ رش ہونے کی وجہ سے خواتین کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی جاتی ہے۔

سرگرم

مزید : ملتان صفحہ آخر