50لاکھ ملازمتوں کی فراہمی کیلئے مینوفیکچرنگ سیکٹرکافروغ ضروری‘ زرک خان

50لاکھ ملازمتوں کی فراہمی کیلئے مینوفیکچرنگ سیکٹرکافروغ ضروری‘ زرک خان

  



لاہور(پ ر)پاک چین جوائینٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر زرک خان نے کہا ہے کہ 50 ملین ملازمتیں پیدا کرنے کا ہدف پورا کرنے کیلئے حکومت کو مینو فیکچرنگ سیکٹر کے فوری فروغ کی حکمت عملی وضع کرنی چاہیے۔ یہ تجویز انہوں نے  پاک چین جوائینٹ چیمبر کے تھنک کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پیش کی۔ اس موقع پر چیمبر کے سینئر نائب صدر معظم گھرکی، سکرٹری جنرل صلاح الدین حنیف اور متعدد اراکین مجلس عاملہ بھی موجود تھے۔ زرک خان نے کہا کہ نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی ممکن بنانے کیلئے معیشت کی شرح نمو کو سالانہ تین سے آٹھ فیصدی کی شرح سے ترقی دینے کی ضرورت ہے جس کیلئے ملک میں سرمایہ کاری کو کم از کم 30 فیصدی کی شرح تک بڑھانا پڑے گا۔۔جبکہ اس وقت یہ شرح صرف 19 فیصدی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرمایہ کاری کی شرح میں مطلوبہ اضافے کیلئے ہمیں چینی حکمت عملی کا مطالعہ کرنا چاہیے جس پر عمل پیرا ہو کر چین نے ریکار ڈ ٹائم میں سرمایہ کاری کی شرح میں 38 فیصدی کا ہدف حاصل کیا۔

 زرک خان نے کہا کہ پاکستان، چین کی معاشی حکمت عملی اور مقامی کاروباری برادری کی مشاورت کے عمل کو اپنا کر پچاس ملین روزگار پیدا کرنے کا ہدف پورا کر سکتا ہے۔ انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ ہماری معاشی پالیسیوں پر آئی ایم ایف کے غلبے کی وجہ سے کاروباری برادری کے مسائل اور انہیں درکار ترغیبات کا معاملہ پس پشت رہنے لگا ہے۔ یہاں تک کہ قومی بجٹ میں کاروباری برادری سے تجاویز حاصل کرنے کے باوجود کاروباری برادری کی ضروریات کو بجٹ میں ترجیح نہیں مل پاتی۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کو چاہیے کہ کاروباری برادری کو معاشی ترقی سے متعلق پالیسی سازی کے عمل کا لازمی جزو  بنائے۔اس موقع پر چیمبر کے سینئر نائب صدر معظم گھرکی نے کہا کہ ملک میں کاروباری اخراجات میں کمی لانے کیلئے ٹھوص حکمت عملی وضع کی جانی چاہیے اور کاروباری برادری کی مشاورت سے بزنس فرینڈلی پالیسیاں تشکیل دی جانی چاہییں۔انہوں نے کہاکہ کاروباری برادر ی کی حوصلہ افزائی کے بغیر نجی شعبہ میں نئی ملازمتیں پیدا نہیں کی جاسکتیں۔ انہوں نے بتا یاکہ ہر سال ملک میں تیس لاکھ نوجوان ملازمتوں کے حصول کیلئے نکلتے ہیں لیکن صرف نو لاکھ نوجوانوں کو  ملازمت مل پاتی ہے۔ ملازمتوں کی پیداوار میں اس قدر وسیع خلاء کو پر کرنے کیلئے نجی شعبہ کو ترغیبات دینے کی ضرورت ہے۔پاک چین جوائینٹ چیمبر کے سیکرٹری جنرل صلاح الدین حنیف نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے سروس سیکٹر کی اہمیت بیان کی اور کہا کہ پاکستان میں سروسز سیکٹر نمایاں ترقی کر رہا ہے مگر ٹیکسوں میں اس کے حصے میں اضافہ نہیں ہو سکا۔ انہوں نے کہاکہ سروسز سیکٹر کو ٹیکسوں کی ادائیگی کی طرف راغب کرنے کیلئے ٹیکسوں کے حصول کا کرپشن فری نظام متعارف کرانے کی ضرورت ہے۔ 

مزید : کامرس