وزیرزراعت کیساتھ کامیاب مذاکرات، کسانوں کا دھرنا ختم

وزیرزراعت کیساتھ کامیاب مذاکرات، کسانوں کا دھرنا ختم

  



 لاہور(لیڈی رپورٹر)پاکستان کسان بورڈ کے حکومت کے ساتھ مذاکرات کامیاب،حکومت نے کسانوں کے مسائل حل کرنے مطالبات پورے کرنے کیلئے 2ہفتوں کا وقت دے دیا۔کسانوں کوکوپن سبسڈی فوراً جاری کرنے اور کیبنٹ کی ذیلی کمیٹی میں کسانوں کو نمائندگی دینے اور مارکیٹ کمیٹیاں فعال کرنے کا بھی وعدہ کیا گیا۔گزشتہ روز پاکستان کسان بورڈ کی طرف سے لاہور پریس کلب کے باہر مظاہرہ اور دھرنا دیا گیا جس کے بعد صوبائی وزیر زراعت ملک نعمان لنگڑیال نے پاکستان کسان بورڈکے ساتھ مذاکرات کیے جن کی کامیابی کے نتیجے میں کسانوں نے دھرنا ختم کر دیا۔صوبائی وزیر زراعت کی طرف سے یقینی دہانی کرائی گئی کہ ٹیوب ویلوں کو بجلی کے بلوں پر جو ٹیکسز لگائے جا رہے ہیں ان کے خاتمے میں میں خود سنجیدہ ہوں۔ مارکیٹ کمیٹیاں جلد فعال کی جائیں گی جس میں کسانوں کو نمائندگی دی جائے گی۔کیبنٹ کی ذیلی کمیٹی میں کسانوں کو نمائندگی دی جائے اور دیگر تمام ایشو ز حل کئے جائیں گئے۔واضح رہے کہ گزشتہ روز کسان بورڈ پاکستان نے پریس کلب کے باہر احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کیا تھا کہ زرعی اجناس کی قیمتوں کو ڈالر کے مطابق طے کیا جائے۔صدر پاکستان کسان بورڈچوہدری نثار اور سیکرٹر ی شوکت علی چدھڑ نے کہا کہ محنت اور لاگت کے مطابق ادائیگی نہیں کی جاتی،پی ٹی آئی حکومت بھی گزشتہ حکومتوں کی طرح کسانوں کا معاشی قتل جاری رکھے ہوئے ہے۔ڈالر کے مطابق فی من گندم کا ریٹ 3ہزار روپے ہونا چاہیے،ڈالر کے مطابق فی من گنے کا ریٹ 350 روپے مختص کیا جائے،مطالبات تسلیم نہ ہوئے تو حکومت پنجاب اور وفاقی حکومت کے خلاف اسلام آباد میں دھرنا دیں گے۔سیکرٹری جنرل شوکت علی چدھڑ نے ”روزنا مہ پا کستان“کو مزید بتایا کہ کسانوں نے مطالبہ کیا کہ بجلی کے بلوں میں فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ اور کوارٹر ٹیرف ایڈجسٹمنٹ بھی واپس لیا جائے جائے۔گند م کی قیمت 1365روپے مقرر کی گئی ہے۔قیمت میں اضافہ 10سال بعد کیا گیا ہے 2009میں گندم کی قیمت 1300روپے فی من مقرر کی گئی تھی۔اوپن مارکیٹ میں 17سو سے 2200گندم فروخت ہو رہی ہے۔کھادوں اور بجلی کی قیمت بڑھ چکی ہے مگر گندم کی قیمت میں محض65روپے اضافہ انتہائی زیادتی ہے۔زراعت پر بجلی کے بلوں پر سبسڈی دی جا رہی تھی جس کے بعد اب ایف پی اے اور کیو ٹی اے شامل کر دیا گیا ہے جس سے بل 18روپے فی یونٹ بل آ رہا ہے۔گنے کی قیمت 190روپے مقرر کی گئی ہے جبکہ جب چینی کی قیمت 48روپے تھی تب بھی گنے کی قیمت 180روپے تھی آج چینی 70روپے ہے گنے کی قیمت محض190روپے ہی ہے اور ملیں بھی بند کر دی گئی ہیں،یہ کسان کے ساتھ بہت بڑی زیادتی ہے۔انہو ں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ صوبائی وزیر زراعت ملک نعمان لنگڑیال نے ہم سے جو وعدے کئے ہیں ان کو پورا کیا جائے گا۔مطالبا ت کو پوارا کر نے کی یقین دہا نی کے بعد جنوری تک مذید کسی بھی قسم کا دھرنا نہیں دیا جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...