شہریت کا متنازع بل،بھارتی اپوزیشن لیڈر بھی میدان آگئے, آئین پر حملہ قراردے دیا

شہریت کا متنازع بل،بھارتی اپوزیشن لیڈر بھی میدان آگئے, آئین پر حملہ قراردے ...
شہریت کا متنازع بل،بھارتی اپوزیشن لیڈر بھی میدان آگئے, آئین پر حملہ قراردے دیا

  



نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن)بھارتی حزب اختلاف کے رہنماوں کی جانب سے شہریت کے متنازعہ قانون پر تنقید کا سلسلہ جار ہے۔ کانگریس کے رہنما راہول گاندھی کی جانب سے بھی شہریت کے متنازع بل پر شدید تنقید کی گئی ہے۔انہوں نے کہا متنازع بل آئین پر حملہ اور قابل مذمت ہے۔

’ جنگ ‘کے مطابق راہول گاندھی نے تارکین وطن کی شہریت سے متعلق بھارت کے متنازع بل کی منظوری پر مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ منظور کردہ متنازع بل بھارتی آئین پر حملہ ہے۔ اس بل کی حمایت کرنے والا ہر شخص بھارتی قوم کی بنیادوں کو نقصان پہنچانا چاہتا ہے۔

دوسری جانب حیدرآباد دکن سے تعلق رکھنے والے بھارتی پارلیمنٹ کے شعلہ بیان مقرر اسد الدین اویسی نے بھی سٹیزن شپ ترمیمی بل کی مذمت کرتے ہوئے گزشتہ روز مسودے کی کاپیاں پارلیمنٹ میں پھاڑ ڈالیں تھی۔

کانگریسی رہنما اور سابق مرکزی وزیر ششی تھرور نے بھی لوک سبھا میں متنازع بل کی مذمت کی ہے، ان کا کہنا تھا کہ سٹیزن شپ ترمیمی بل کی منظوری محمد علی جناح کی گاندھی کے مقابلے میں فتح ہے۔

واضح رہے کہ بی جے پی حکومت کے پیش کردہ بل کا مقصد سٹیزن شپ بل 1955ءمیں تبدیلی کرنا ہے، جس کے تحت پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے تعلق رکھنے والے ان غیرقانونی، غیرمسلم شہریوں کو بھارتی شہریت دینا ہے جو 31دسمبر 2014ءیا اس سے قبل بھارت آگئے تھے۔

بھارتی حکومت کی جانب سے قانون سازی کی اس کوشش پر پاکستان اور امریکا نے تشویش کااظہارکیاہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...